نیب کی ڈوریاں ہلانے والا آج تک کوئی پیدا نہیں ہوا، ڈوریاں ہلیں تو بریف کیس اٹھا کر گھر چلا جاؤں گا ،ْ چیئر مین نیب

نواز شریف کے خلاف معاملہ احتساب عدالت میں ہے، ان کے جانے پر رائے نہیں دے سکتا، انسانی ہمدردی بھی کوئی چیز ہے ،ْ نواز شریف کو روکنا میرا کام نہیں ،ْملک میں کرپشن کے حجم کی بات بہت آگے نکل گئی ہے، کچھ لوگوں کے خلاف کارروائی ہوئی، کوئی ملازمت سے فارغ ہوا اور کچھ گرفتار ہوئے ہیں ،ْکسی کے خلاف امتیازی یا انتقامی کارروائی ثابت ہو جائے تو ذمہ داری لوں گا ،ْالیکشن ہونے یانہ ہونے سے نیب کا کوئی تعلق نہیں، اگر کسی نے کرپشن کی ہے تو الیکشن سے پہلے اور بعد میں بھی قابل گرفت ہے ،ْ جسٹس ریٹائر ڈ جاوید اقبا ل کی گفتگو

بدھ اپریل 16:20

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہاہے کہ نیب کی ڈوریاں ہلانے والا آج تک کوئی پیدا نہیں ہوا، اگر ڈوریاں ہلیں تو بریف کیس اٹھا کر گھر چلا جاؤں گا ،ْنواز شریف کے خلاف معاملہ احتساب عدالت میں ہے، ان کے جانے پر رائے نہیں دے سکتا، انسانی ہمدردی بھی کوئی چیز ہے ،ْ نواز شریف کو روکنا میرا کام نہیں ،ْملک میں کرپشن کے حجم کی بات بہت آگے نکل گئی ہے، کچھ لوگوں کے خلاف کارروائی ہوئی، کوئی ملازمت سے فارغ ہوا اور کچھ گرفتار ہوئے ہیں ،ْکسی کے خلاف امتیازی یا انتقامی کارروائی ثابت ہو جائے تو ذمہ داری لوں گا ،ْالیکشن ہونے یانہ ہونے سے نیب کا کوئی تعلق نہیں، اگر کسی نے کرپشن کی ہے تو الیکشن سے پہلے اور بعد میں بھی قابل گرفت ہے۔

(جاری ہے)

بد ھ کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کو بریفنگ کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیئرمین نیب نے کہا کہ الیکشن ہونے یا نا ہونے سے نیب کا کوئی تعلق نہیں ،ْ اگر کسی نے کرپشن کی ہے تو الیکشن سے پہلے اور الیکشن کے بعد بھی جوابدہ ہے۔چیئرمین نیب نے کہا کہ اگر کبھی کسی کیس میں ثابت ہوجائے کہ نیب نے انتقامی کارروائی کی ہے تو اس کی خود ذمہ داری قبول کروں گا اور گھر چلا جاؤں گا۔

جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا کہ اگر مجھے کوئی برا کہے تو کبھی بٴْرا نہیں مناؤں گا تاہم اگر کوئی ادارے کو برا کہے تو بطور نیب کے سربراہ اپنے ادارے کا دفاع کروں گا۔چیئرمین نیب نے کہا کہ ملک میں کرپشن کے حجم کی بات بہت آگے نکل گئی ہے، کچھ لوگوں کے خلاف کارروائی ہوئی، کوئی ملازمت سے فارغ ہوا اور کچھ گرفتار ہوئے ہیں۔چیئرمین نیب نے کہا کہ کچھ لوگوں کے خلاف انکوائری شروع ہو چکی مزید بھی ہوں گی، نیب کسی قسم کی انتقامی کاروائی نہیں کر رہا، اگر کسی کے خلاف امتیازی یا انتقامی کارروائی ثابت ہو جائے تو ذمہ داری لوں گا اور عہدہ چھوڑ دوں گا۔

انہوںنے کہاکہ الیکشن ہونے یانہ ہونے سے نیب کا کوئی تعلق نہیں، اگر کسی نے کرپشن کی ہے تو الیکشن سے پہلے اور بعد میں بھی قابل گرفت ہے۔۔نواز شریف کی اہلیہ کی عیادت کے لئے برطانیہ روانگی پر جسٹس ریٹائرڈ جاویداقبال نے کہا کہ نواز شریف کے خلاف معاملہ احتساب عدالت میں ہے، اس لیے ان کے جانے پر رائے نہیں دے سکتا، انسانی ہمدردی بھی کوئی چیز ہے اور نواز شریف کو روکنا میرا کام نہیں، نواز شریف کے واپس نہ آنے کے خدشے کی کوئی بات نہیں۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ میں موجود مطلوب افراد کو واپسی کیلئے ریڈ نوٹسز جاری کیے گئے ہیں، آئندہ آنے والے دنوں میں بہت سے مطلوب افراد کو واپس لائیں گے۔