پی ٹی وی ، پارلیمنٹ حملہ کیس پرویز خٹک اور شوکت یوسفزئی کی عبوری ضمانت منظور

اسلام آباد کی انسداد دہشت گری عدالت کا ایک ایک لاکھ کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کا حکم آرمی اور اداروں کیخلاف کوئی بات برداشت نہیں کرینگے ‘چاہے شریف خاندان کی طرف سے کیوں نہ کی جائے‘جب پی ٹی وی پر حملہ ہو ا میں کے پی ہائوس میں سویا ہوا تھا ،تحریک انصاف کا کوئی بند ہ اس حملے میں ملوث نہیں تھا‘راستے بلاک کرنا پاکستان کے آئین میں نہیں ہے‘پرویز خٹک کی میڈیا سے بات چیت

بدھ اپریل 17:24

پی ٹی وی ، پارلیمنٹ حملہ کیس پرویز خٹک اور شوکت یوسفزئی کی عبوری ضمانت ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) اسلام آباد کی انسداد دہشت گری عدالت نے پی ٹی وی اور پارلیمنٹ حملہ کیس میں پی ٹی آئی رہنما پرویز خٹک اور شوکت یوسفزئی کی عبوری ضمانت منظور کرلی۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد انسداد دہشت گردی میںپی ٹی وی اور پارلیمنٹ حملہ کیس کی سماعت کی گئی۔۔پرویز خٹک اور شوکت یوسفزئی عالت میں پیش ہوئے۔

درخواست ضمانت میں لکھا گیا کہ مقدمے بے بنیاد ہیں ،ضمانت منظور کی جائے۔ عدالت نے پرویز خٹک اور شوکت یوسفزئی کی پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس میں عبوری ضمانت منظورکر لی۔دونوں کو عدالت کی جانب سے ایک ،ایک لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا گیا ہے۔عدالت نے پولیس کو نوٹس بھیج دیا جس میں پرویز خٹک کی دوبار ضمانت میں توسیع 23اپیل کو ہوگی جبکہ شوکت یوسفزئی کی سماعت 25اپریل کو کی جائے گی۔

(جاری ہے)

تحریک انصاف کے رہنما پرویز خٹک نے عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ آرمی اور اداروں کے خلاف کوئی بات برداشت نہیں کریں گے ‘چاہے شریف خاندان کی طرف سے کیوں نہ کی جائے۔انہوں نے کہا کہ جب پی ٹی وی پر حملہ ہو ا میں کے پی ہائوس میں سویا ہوا تھا ،،تحریک انصاف کا کوئی بند ہ اس حملے میں ملوث نہیں تھا۔راستے بلاک کرنا پاکستان کے کسی آئین میں نہیں ہے ،اس حوالے سے میں نے حکومت کے خلاف کیس دائر کیا ہوا ہے،جس کا سامنا حکومت کو کرنا پڑے گا۔