پاک بھارت کشیدگی تیسری عالمگیر جنگ کا باعث بن سکتی ہے‘علی گیلانی

تنازعہ کشمیر کے حل کے بغیر خطے میںامن کا خواب ممکن نہیں، بھارت کشمیری خواتین کی آبرو ریزی کو جنگی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہا ہے اگر بھارت زمینی حقائق تسلیم کرلے تو تنازعہ کشمیر کے حل کی حل کی راہ نکل سکتی ہے اوربے گناہ انسانوں کے خون کا سلسلہ رک سکتا ہے

جمعرات اپریل 12:18

سرینگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا ہے کہ تنازعہ کشمیر کے حل کے بغیر خطے میں دیر پاامن وترقی کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا۔ انہوںنے کہا کہ تنازعہ کشمیر کو حل نہ کیا گیاتو خطے کی دو ایٹمی طاقتوں کے درمیان کشیدگی تیسری عالمگیر جنگ کا باعث بن سکتی ہے ۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق سید علی گیلانی نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی برطانیہ آمد کے موقع پر لندن میں کشمیریوں کے ایک احتجاجی جلسے سے ٹیلیفونک خطاب میں کہا کہ اگر بھارت اپنی ضد اور ہٹ دھرمی چھوڑ کر زمینی حقائق تسلیم کرلے تو تنازعہ کشمیر کے حل کی حل کی راہ نکل سکتی ہے اور خطے میں بے گناہ انسانوں کے خون کا سلسلہ رک سکتا ہے۔

(جاری ہے)

سید علی گیلانی نے کہاکہ کشمیری ایک امن پسند قوم ہے لیکن بھارت کی وعدہ خلافیوں کے سبب وہ اسکے خلاف تحریک چلانے پر مجبور ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے تقسیم ہند کے م فارمولے کی دھجیاں اڑاتے ہوئے جموں کشمیر پر اپنی فوجیں اُتاریں اور گزشتہ ستر برس سے اس نے علاقے میں قتل وغارت کا بازار گرم کر رکھا ہے۔ سید علی گیلانی نے کہا کہ بھارت کشمیری خواتین کی آبرو ریزی کو ایک جنگی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔

سید علی گیلانی نے کہا کہ کشمیری بھارت سے اسکا کوئی حصہ چھیننا نہیں چاہے بلکہ پنی سرزمین پر اسکے غیر قانونی قبضے کو ختم کرانے کیے لیے ایک پر امن تحریک چلا رہے ہیں جسے طاقت کے بل پر دبانے کی بھر پور کوشش کی جا رہی ہے۔ حریت چیئرمین نے کہا کہ قابض بھارتی فورسز کے انسانیت سوز مظالم کے باوجود کشمیریوں کے حوصلے بلند ہیں اور وہ شہداء کے مقدس مشن کی تکمیل تک اپنی جد وجہد جاری رکھنے کا عزم کیے ہوئے ہیں۔

دریں اثنا کل جماعتی حریت کانفرنس کے جنرل سیکریٹری حاجی غلام نبی سمجھی نے اسلام آباد قصبے میں طلبہ پر طاقت کے وحشیانہ استعمال کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پُرامن احتجاجی مطاہروں پر لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا بے دریغ استعمال بھارتی فورسز کا معمول بن چکا ہے۔انہوںنے کہا کہ بھارت نہتے کشمیریوں پر بدترین مظالم ڈھا رہا ہے اور مقبوضہ وادی میں اس وقت انسانی حقوق کی پاسداری کا کوئی نام و نشان باقی نہیں۔ غلام نبی سمجھی نے کہا کہ بھارت کی یہ غلط فہمی ہے کہ وہ فوجی طاقت کے بل پر کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو دبانے میں کامیاب ہو گا۔