آصفہ کے سفاکانہ قتل کیخلاف مظفرآباد کی سینکڑوں بچیاں سڑکوں پر آگئیں

آصفہ، نیلوفر اور آسیہ کے قاتلوں کو عالمی عدالت انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے‘ ہندوستان مقبوضہ علاقے میں جنگ ہار چکا ‘بھارت فوجی طاقت اور گھٹیا ہتھکنڈوں سے ہاری ہوئی جنگ نہیں جیت سکتا‘ مقررین کا مظاہرے سے خطاب

جمعرات اپریل 17:56

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) جموں کے ضلع کٹھوعہ میں معصوم آصفہ بانوکاسفاکانہ قتل،،نیلوفر اور آسیہ کی شہادتیں جموں کشمیر کے عوام فراموش نہیں کرسکتے۔ آصفہ، نیلوفر اور آسیہ کے قاتلوں کو عالمی عدالت انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے‘ ہندوستان مقبوضہ علاقے میں جنگ ہار چکا بھارت فوجی طاقت اور گھٹیا ہتھکنڈوں سے ہاری ہوئی جنگ نہیں جیت سکتا، کشمیرمیں نہتے شہریوں پر بھارتی افواج کے ظلم و بربریت کے خلاف کشمیری بچیوں کا پاسبان حریت جموں وکشمیرکے زیراہتمام خاموش احتجاج اوردھرنا، مظفرآباد کی سینکڑوں بچیاں آصفہ بانو پر ہوئے ظلم کیخلاف سڑکوں پر نکل آئیں۔

سیاسی، مزہبی جماعتوں کے قائدین سمیت کثیر تعداد میں نوجوان شریک ہوئے ریلی سے چیئرمین پاسبان حریت جموں کشمیرعزیراحمد غزالی، جماعت اسلامی کے نائب امیر شیخ عقیل الرحمن تحریک انصاف کے سینئر نائب صدرخواجہ فاروق احمد، پیپلز پارٹی کے راہنما شوکت جاوید میر، مسلم کانفرنس کے راہنماغلام مرتضی گیلانی، اے پی آر سی کے صدر نشاد احمدبٹ، انسانی حقوق کی تنظیم کے نمائندہ بلال احمد فاروقی، پاسبان کے وائس چیئرمین عثمان علی، قاضی محمد خوشحال، شہناز قاضی اورمہناز قریشی نے دھرنے سیخطاب کرتے ہوئے کہا کے بھارتی فوج کشمیری بچوں ،جوانوں کو شہید کر رہی ہے عفت مآب خواتین کی عصمتوں کو پامال کیا جارہا ہے اور قتل کیا جا رہا ہے بھارت پوری فوجی طاقت کے ساتھ جموں کشمیر کے عوام پر جنگ مسلط کرچکا ہے عالمی برادری کی بے حسی اورجموں کشمیر کے معاملے پر لاپرواہی قابل مذمت ہے۔

(جاری ہے)

مقررین نے کہا اگر شوپیاں میں بھارتی فوج کی درندگی کا شکار ہونے والی نیلوفر اورآسیہ کے قاتلوں کو عبرت کا نشان بنایا ہوتا تو کٹھوعہ میں نہ آصفہ کی عزت لٹتی اور نہ ہی اس کی زندگی چھینی جاتی، آصفہ بانو کے مجرموں کے ساتھ ہندو انتہا پسند لیڈروں کی حمایت سے یہ بات واضع ہو گئی کے جموں کشمیر کے لوگوں کے پاس بھارت سے مکمل آزادی کے بنا کوئی راستہ نہیں مقررین نے کہا کے بھارت جموں کشمیر میں ظلم، بربریت، وحشت، درندگی کی تمام حدیں پار کر چکا ہے، ساری فوجی طاقت کے استعمال سے بھی بھارت کشمیری عوام کے جذبہ آزادی کو کچلنے میں ناکام ہو چکا ہے ۔

مقررین نے اقوام متحدہ،، او آئی سی، سلامتی کونسل کے ممبر ممالک اور انسانی حقوق کی انجمنوں سے آصفہ بانو، نیلوفر اور آسیہ کے مجرموں کو عالمی عدالت انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کے بھارت کی متعصب عدلیہ سے ان قاتلوں کو سزا ملنی ناممکن ہے .مقررین نے جموں بار کے ان وکلاء کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کے انصاف کے رکھوالے آصفہ کے قاتلوں کے ساتھی بن گئی...بھارت کیخلاف احتجاج کرتی بچیوں نیسروں اور منہ پر سیاہ پٹیاں باندھ کربھارتی بربریت کیخلاف مارچ کیا بچیوں کا آزادی کے حق اور بھارت مخالف شدید نعرہ بازی انصاف دو انصاف دو آصفہ کو انصاف دو، اے حق ہمارا آزادی، ہم چھین کے لیں گے آزادی، بچیوں نے بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر جاگ اقوام متحدہ جاگ، بھارت کشمیری بچوں کا قاتل ہے کے نعرے درج تھے بعد ازاں بچیوں نے خاموش احتجاج کرتیہوئے برہان وانی چوک سے گھڑی پن چوک تک ریلی نکالی۔