ضلع باغ میں سات سالہ نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی

شدید زخمی حالت میں نجی ہسپتال داخل کرادیا گیا ،عوام کا شدید احتجاج

جمعہ اپریل 15:54

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) ضلع باغ کے نواحی علاقے چکار کھاوڑہ کٹکیل میں 7سالہ نور فاطمہ کے ساتھ گزشتہ جمعہ کو ذیادتی ،بچی کو شدید زخمی حالت میں ضلع باغ کے ایک پرائیویٹ ہسپتال میں منتقل کیا ، وہاں ابتدائی طبی امداد کے بعد ضلع سدھنوتی پلندری کے ایک نجی ہسپتال میں داخل کردیا،ذیادتی کی خبر علاقے میں آگ کی طرح پھیل گئی جس کے باعث عوام علاقے نے دھیرکوٹ رانگلے میں شدید احتجاج کرکے روڈبند کردی جس پر محکمہ پولیس حرکت میں آگئی ، ڈی ایس پی مقصودعباسی موقع پر پہنچ گئے اور عوام کو مکمل یقین دہانی کروائی کہ لاپتہ نور فاطمہ کو ڈھونڈ کر میڈیا کے سامنے لائینگے جس پر ایس ایچ او چکار واجد علوی بھی 2روز سے چھان بین میں لگے رہے مگر ناقص تحقیقات پر محکمہ پولیس کی جانب سے تبدیل کرکے تھانہ لیپہ میں تعینات کردیا جبکہ راجہ یاسر خان خان کو چکار تھانے میں تعینات کردیا گیا جس کے بعد ایک بار پھر ملزم باسط زاہد عباسی کی تلاش شروع کردی جبکہ متاثرہ لڑکی کو پلندری ہسپتال سے برآمد کرکے ہٹیا ں بالا ہسپتال میں لایا گیا جہاں میڈیکل رپورٹ بھی بااثر شخصیت کی مداخلت سے تبدیل کردی گئی! ذرائع کے مطابق رپورٹ میں جس کو پولیس نے خفیہ رکھا ذیادتی کے کوئی شوہدات نہ ملنے کی کی نشاندہی کی ہے ! جس کے بعد عوام نے ایک بار پھر شدید احتجاج کرکے سڑکیں بند کردی ،ایس پی جہلم ویلی کا کہنا ہے کہ ملزم کو ہر حالت میں گرفتار کرکے کیفردار تک پہنچایا جائیگاجبکہ ملزم باسط زاہد عباسی نے اپنی عبوری ضمانت کروالی !۔

متعلقہ عنوان :