برطانیہ میں رہنے والے کشمیریوں اور پاکستانیوں نے مودی کیخلاف مظاہرے میں شرکت کرکے ثابت کیا ہے کہ کشمیری آزادی سے کم کوئی حل قبول نہیں کریں گے‘تحریک انصاف شعبہ خواتین برمنگھم کی صدر رانی عارف کا بیان

جمعہ اپریل 16:52

برمنگھم(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) تحریک انصاف شعبہ خواتین برمنگھم کی صدر رانی عارف نے کہا ہے کہ برطانیہ میں رہنے والے کشمیریوں اور پاکستانیوں نے مودی کے خلاف مظاہرے میں شرکت کرکے ثابت کیا ہے کہ کشمیری آزادی سے کم کوئی حل قبول نہیں کریں گے۔لندن مظاہرے میں خواتین اور بچوں نے بھی کافی تعداد میں شرکت کر کے مقبوضہ کشمیر کے مظلوم ومحکوم بھائیوں،بہنوں،بزرگوں اور بچوں سے اظہار یکجہتی کیا۔

کشمیری لیڈروں اور سب کا مقصد محکوم کشمیریوں کی آواز کو بلند کرنا تھا جس کے لئے پارلیمنٹ کے سامنے اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے اپنے بیان میں کیا۔ا نہوںنے کہا کہ مودی کی برطانیہ آمد کے موقع پر آزا د کشمیر اور مقبوضہ کشمیر کی قیادتوں نے یک جان ہو کر ثابت کیا کہ کشمیری کی آزادی کے لئے سب یک نکاتی ایجنڈے پر متفق ہیں۔

(جاری ہے)

مظاہرے کے موقع پررا کے ایجنٹ بھی اپنا کردار ادا کر رہے تھے مگر غیور پاکستانیوں اورکشمیریوں نے ان کے ارادوں کو ناکام بنا دیا۔مظاہرے میں سکھ، نیپالی اور دوسری قومیت کے لوگوں نے بھی بھرپور شرکت کر کے کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیا۔ اس سے یہ بات صاف ظاہر ہے کہ مودی سرکار کے ظلموستم سے سب ہی نالاں ہیں۔انہوںنے کہا کہ آزاد کشمیر کی قومی قیادتوں نے یکجہتی کا ثبوت دیا جو مبارک باد کے حق دار ہیں۔

ہمارے آپس میں تو سیاسی اختلافات ہو سکتے ہیں مگر مقبوضہ وادی اور سیز فائر لائن پر بھارتی ظلم و ستم کے خلاف سب متحد ہیں۔تمام سیاسی جماعتیں مسلم لیگ پی ٹی آئی، پیپلز پارٹی ،مسلم کانفرنس ،تحریک کشمیر سماجی اور فلاحی تنظیمیں مبارکباد کی حقدار ہیں ۔سب کا مقصد ایکتھا کہ مودی کے مکروہ چہرے کو بے نقاب کیا جائے۔اور انشا اللہ وہ دن دور نہیں جب کشمیریوں کی قربانیاں رنگ لائے گئیں اور کشمیری آزادی کا سورج طلوع ہوتا دیکھیں گے۔