ہنگو،اورکزئی ایجنسی سے تعلق رکھنے والے دہشت گردی کے الزام میں گرفتار مزید 9قیدیوں کو رہا کر دیا گیا

جمعہ اپریل 18:20

ہنگو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) اورکزئی ایجنسی سے تعلق رکھنے والے دہشت گردی کے الزام میں گرفتار مزید 9قیدیوں کو رہا کر دیا گیا ۔اب تک 20قیدیوں کو رہا کر دیا گیا ہے ان قیدیوں میں 3سے 7سال تک قید جیلوں میں گزاری ان قیدیوں کو سیکیورٹی فورسز نے کوہاٹ ہنگو اور اورکزئی ایجنسی کے مختلف علاقوں سے گرفتار کیا تھا اس حوالے سے گزشتہ روز اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اپر اورکزئی ایجنسی حیدر حسین کے دفتر میں قیدیوں کی رہائی کا ایک مختصر تقریب منعقد ہوا تقریب میں ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر جی جی جمال صدر پاکستان پیپلز پارٹی اورکزئی ایجنسی اقبال حسین سینیٹر اورنگزیب کے بھائی حاجی شکیل بھی موجود تھے ۔

قیدیوں سے خطاب کرتے ہوئے ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر جی جی جمال اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ حیدر حسین و دیگر نے کہا کہ اب لوگ آج سے یہ عہد کریں کہ ملک اور علاقے کے خلاف کسی بھی قسم کے سرگرمیوں میں حصہ نہیں لیں گے بلکہ اپنے علاقوں میں ملک دشمن عناصر کو نہیں چھوڑیں گے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ اپ لوگ اپنے علاقے ملک ماں باپ اور بچوں پر رحم کریں اور آئندہ اپنے ملک و قوم اور علاقے کی خدمت کریں ۔

دہشت گردوں کے خلاف فورسز اور حکومت کا ساتھ دیں۔ تقریب کے دوران رہا کئے گئے قیدیوں نے کہا کہ ہم اپنے زمین کو ماں کا درجہ دیتے ہیں ہم آج سے یہ عہد کرتے ہیں کہ ہم اپنے علاقے کی حفاظت کریں گے اور کسی بھی مشکوک شخص کو اپنے علاقوں میں نہیں چھوڑیں گے۔ اپنے علاقوں میں امن و امان کی قیام کی خاطر فورسز اور حکومت کا ساتھ دیں گے ۔ہم محب وطن ہیں اپنے ملک اور علاقوں سے بے پناہ محبت کرتے ہیں آ ج کے بعد نہ خود غلط کام کریں گے اور نہ کسی کو کرنے دیں گے انہوں نے تما م فاٹا اور بالخصوص اورکزئی ایجنسی کے نوجوانوں کو پیغام دیا کہ وہ اپنی زندگیوں کو برباد نہ کریں غلط راستوں کی بجائے صحیح راستہ چنیں دہشت گردوں کے خلاف حکومت اور فورسز کا ساتھ دیں یاد رہے کہ اب تک دہشت گردی کے الزام میں گرفتار جی آئی ٹی کے بعد قبائلی مشران کی ضمانت پر 20قیدیوں کو رہا کیا جا چکا ہے ان قیدیوں میں 3سال سے 7سال تک جیلوں میں قید گزاری ہے ان کو ہنگو کوہاٹ اور اورکزئی ایجنسی کے مختلف علاقوں سے فورسز نے گرفتار کیا تھا ۔