لاہور ،پاکستان کی بقاء و سلامتی نظام مصطفی ؐ کے نفاذ میں ہے،حافظ طاہر اشرفی

مدینہ منورہ کی ریاست مسلم اور غیر مسلموں کے حقوق کی محافظ تھی ، انتہاء پسندی ، دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف عالمی سطح پر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے،چیئرمین پاکستان علماء کونسل

جمعہ اپریل 23:40

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) پاکستان کی بقاء و سلامتی نظام مصطفی ؐ کے نفاذ میں ہے ، مدینہ منورہ کی ریاست مسلم اور غیر مسلموں کے حقوق کی محافظ تھی ، انتہاء پسندی ، دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف عالمی سطح پر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ، پیغام اسلام کانفرنس پیغام پاکستان کے مشترکہ نقاط کی تائید ہو گی ، یہ بات پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین اور وفاق المساجد پاکستان کے صدر حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے پیغام اسلام کانفرنس کی انتظامی کمیٹیوں کے اجلاس کے بعد کہی ، اس موقع پر مولانا محمد ایوب صفدر ، مولانا عبد الحمید وٹو ، قاضی مطیع اللہ سعیدی ، مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا محمد شفیع قاسمی ، حاجی طیب شاد قادری ، مولانا اسید الرحمن سعید ، مولانا محمد اشفاق پتافی ، مولانا زبیر زاہد ، مولانا عبد القیوم فاروقی ، مولانا شمس الحق ، مولانا مبشر رحیمی اور دیگر بھی موجود تھے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ تیسری سالانہ پیغام اسلام کانفرنس میں 12 سے زائد اسلامی ممالک کے مندوبین شریک ہوں گے ، کانفرنس میں انتہاء پسندی ، دہشت گردی ، فرقہ وارانہ تشدد ، اسلامی اور عرب ممالک میں بیرونی مداخلت ، پاکستان سعودی عرب اور دیگر اسلامی ممالک کے خلاف ہونے والی سازشوں کے بارے میں متفقہ لائحہ عمل سامنے لایا جائے گا ، انہوں نے کہا کہ اسلامی ممالک میں تباہی پھیلانے والوں کو ہدف پاکستان ہے ، امریکہ ، اسرائیل ، بھارت پاکستان کی فوج اور قوم کے درمیان غلط فہمیاں پیدا کرنے کیلئے کوشاں ہیں لیکن اس طرح کی سازشیں کامیاب نہیں ہوں گی ،انہوں نے کہا کہ کسی کو پاک فوج یا پاکستان کی سلامتی اور استحکام کیلئے قربانیاں دینے والوں کے خلاف سازشیں نہیں کرنے دی جائیں گی ، پاکستانی قوم ، افواج پاکستان ، سلامتی کے اداروں اور وردی کی عظمت و احترام کی خود محافظ ہے ، انہوں نے سعودی عرب میں پولیس اور سلامتی کے اداروں پر حملوں کی شدید مذمت کی۔