آسٹریا جرمن سرحد پر شناختی دستاویزات کی جانچ شروع کر سکتا ہے

ہفتہ اپریل 10:00

ویانا ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) آسٹریا جرمنی کے ساتھ اپنی سرحد پر رواں برس کے وسط سے سفری دستاویزات کی جانچ پڑتال کا عمل شروع کر سکتا ہے۔ اس اقدام کا مقصد آسٹریا کے سرحدی کنٹرول کو سخت تر بنانا ہے۔آسٹریا کے انتہائی دائیں بازو کی جماعت سے تعلق رکھنے والے وزیر داخلہ ہیربرٹ کیکل کا کہنا ہے کہ رواں برس یورپی یونین کی ششماہی صدارت سنبھالنے پر آسٹریا اپنی سرحدوں پر بارڈر کنٹرول بھی سخت کر دے گا۔

آسٹریا، جرمنی اور چند دیگر یورپی ممالک نے 2015ء میں مہاجرین کے بحران کے تناظر میں شینگن معاہدے کو جزوی طور پر معطل کرتے ہوئے اپنی قومی سرحدوں پر جانچ پڑتال کا عمل دوبارہ رائج کر دیا تھا۔ تب کھلی سرحدوں ہی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ایک ملین سے زائد تارکین وطن، جن میں سے بڑی تعداد مشرق وسطیٰ سے تعلق رکھنے والے افراد کی تھی، ترکی سے بحیرہء ایجیئن کے ذریعے یونان اور پھر بلقان کے خطے سے ہوتے ہوئے مغربی اور شمالی یورپی ممالک پہنچے تھے۔

(جاری ہے)

جرمن حکومت نے کہا تھا کہ وہ آسٹریا کے ساتھ سرحد پر جاری جانچ پڑتال کے عمل کو مزید چھ ماہ کے لیے توسیع دینا چاہتی ہے، تاکہ مہاجرین کے بہاؤ سے نمٹا جا سکے۔ سرحد پر اسی جانچ پڑتال کے عمل کی وجہ سے آسٹریا سے جرمنی میں داخل ہونے والے افراد کو آسٹریا کی جانب لمبی قطاروں میں دیکھا جا سکتا ہے، تاہم اس کے جواب میں آسٹریا نے جرمن سرحد پر اس طرز کے اقدامات متعارف نہیں کرائے تھے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :