48 اراکین اسمبلی خواتین کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے میں ملوث نکلے

ہفتہ اپریل 11:30

48 اراکین اسمبلی خواتین کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے میں ملوث نکلے
واشنگٹن/نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) ایسوسی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمز نے خواتین سے زیادتی ،زبردستی شادی،، لڑکیوں کی اسمگلنگ میں ملوث 48ارکان پارلیمنٹ کا بھانڈا پھوڑ دیا،دوسری جانب بھارت میں خواتین کے خلاف زیادتیوں پر عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کی ڈائریکٹرکرسٹین لیگارڈ بھی پھٹ پڑیں،،بھارتی ٹی وی کے مطابق بھارت میں خواتین سے متعلق سنسنی خیز انکشافات ہوا کہ 48ارکان اسمبلی خواتین سے زیادتی، زبردستی شادی،، اور اسمگلنگ کے مکروہ دھندے میں ملوث نکلے۔

(جاری ہے)

اور اس میں سب سے آگے ہندو انتہا پسند ہیں۔ 12ارکان کا تعلق حکمران جماعت بی جے پی سے ہے جبکہ 7ارکان کا تعلق انتہا پسند شیو سینا سے ہے۔ایسوسی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمز کی رپورٹ کیمطابق 48 ارکان پارلیمنٹ کے نام خواتین کے خلاف خطرناک جرائم کے کیسزمیں شامل ہیں، گزشتہ دنوں اتر پردیش سے بی جے پی کے رکن اسمبلی کلدیپ سنگھ کو زیادتی کیس میں گرفتاربھی کیا گیا۔دوسری جانب بھارت میں خواتین کے خلاف زیادتیوں پر عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کی ڈائریکٹرکرسٹین لیگارڈ بھی پھٹ پڑیں، واشنگٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے نریندر مودی سے سنجیدہ اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کر دیا۔