پنجاب میں بھی غیر متعلقہ شخصیات سے سکیورٹی واپس ،رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش

آئی جی پنجاب عارف نواز کو شاباش ، کم وقت میں اچھا کام کیا ہے ‘ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار

ہفتہ اپریل 16:40

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) پنجاب میں بھی غیر متعلقہ شخصیات سے سکیورٹی واپس بلا لی گئی جس کی رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کر دی گئی ۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں وی آئی پی شخصیات کو اضافی سکیورٹی دینے کے خلاف از خود نوٹس کی سماعت کی ۔انسپکٹرک جنرل پولیس پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے اضافی سکیورٹی واپس لینے کی رپورٹ عدالت میں جمع کرا دی۔

(جاری ہے)

رپورٹ کے مطابق مجموعی طور پر 4610 اہلکار واپس بلائے گئے، سیاستدانوں سی297 اہلکارواپس لیے گئے، 527 اضافی اہلکار سول اور پولیس افسران سے واپس لیے گئے ہیں جبکہ 469 اضافی اہلکار ماتحت عدلیہ کے ججز سے لیے گئے ہیں۔دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ جنہیں سکیورٹی کی ضرورت ہے انہیں ضرور سکیورٹی دیں، ایسانہ ہو سکیورٹی نہ ہونے کی وجہ سے کوئی سانحہ ہو۔۔چیف جسٹس نے آئی جی پنجاب کو شاباش دیتے ہوئے کہا کہ کم وقت میں اچھا کام کیا ہے ۔عدالت نے 2 ہفتوں میں سکیورٹی واپس لینے سے متعلق مکمل رپورٹ طلب کرلی۔