ملک کے عوام سیکولر بے دین ناکام پارٹیوں سے تنگ آچکے ہیں، مولانا عبدالحق ہاشمی

عوامی مسائل حل نہ کرنا منتخب نمائندوں وحکومتوں کی ناکامی ہیں عوام آئندہ انتخابات میں دینی جماعتوں کوبھرپورکامیابی دلوائیں گے،صوبائی امیر جماعت اسلامی

ہفتہ اپریل 21:10

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مولانا عبدالحق ہاشمی نے کہا کہ ملک کے عوام سیکولر بے دین ناکام پارٹیوں سے تنگ آچکے ہیںعوامی مسائل حل نہ کرنا منتخب نمائندوں وحکومتوں کی ناکامی ہیں عوام آئندہ انتخابات میں دینی جماعتوں کوبھرپورکامیابی دلوائیں گے ۔پانامالیکس،،دبئی لیکس،ملکی قرضے معاف کرانے والوں اور نیب کے پاس میگااسکینڈلز میں جماعت اسلامی یاکسی بھی دینی جماعت کے کسی فرد کا نام شامل نہیں ہے جو دینی جماعتوں کو دیگر سیاسی پارٹیوں سے ممتازکرتی ہے۔

گزشتہ حکومتیں عوامی مسائل حل کرنے اور میگاپراجیکٹس شروع کرنے میں ناکام ہوئے ہیں ۔شریعت کے خلاف کوئی قانون قبول نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ آئندہ الیکشن کے لیے جماعت اسلامی کی ہر سطح کی قیادت کو عوام کے ساتھ اپنا رشتہ مضبوط کرنا ہوگا۔

(جاری ہے)

عام لوگوں کے مسائل حل کرنے کے لیے ہمیں اپنا کردار اداکرنا چاہئے۔۔جماعت اسلامی ملک میں اسلامی انقلاب کے لیے جدوجہد کررہی ہے۔

ملک دشمن بیرونی قوتیں پاکستان کے خلاف سازشیں کررہی ہے۔۔پاکستان میں عدلیہ اور دیگر اداروں کی مضبوطی سے ملک دشمن قوتوں کے عزائم کو ناکام بنایاجاسکتاہے۔ جماعت اسلامی نے کرپشن کے خاتمے، عدلیہ کی بحالی کی تحریک میں نمایاں کردار اداکیا تھا۔اب بھی ہم سمجھتے ہیں کہ عدلیہ کے ادارے کو مستحکم کرنے کے لیے تمام سیاسی قوتوں کو مل کرجدوجہد کرنی چاہئے۔

جماعت اسلامی نے ہمیشہ اپنے مثبت کردار کو اداکرتے ہوئے عوامی ایشوز کو اجاگر کیا ہے۔۔جماعت اسلامی کی کرپشن فری پاکستان تحریک الحمدللہ کامیابی سے ہمکنار ہوئی ہے۔ہم ملک میں موجودتمام کرپٹ عناصر کا احتساب چاہتے ہیں۔ موجودہ سیاسی صورتحال کے پیش نظر سب کو مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ جماعت اسلامی موروثیت سے وکرپشن سے پاک جماعت ہے۔ہمارے مختلف ادوار میں کامیاب ہوکر اسمبلیوں میں جانے والے افراد کا دامن کرپشن سے صاف ستھرا ہے۔ہمارے نمائندوں نے ذات پات سے بالاترہوکر ملک وقوم کی فلاح وبہبود کے لیے کام کیاہے۔ پاکستان کو صحیح معنوں میںاسلامی فلاحی ریاست بنانے کے لیے کام کیا جائے۔موجودہ حکمرانوں نے لوٹ مار کے سوا کچھ نہیں کیا۔عوام کے مسائل جوں کے توں ہی ہیں۔