عدالت عظمیٰ کے فیصلے سے کئی اہم شخصیات کی جان خطرے میں پڑ گئی ہے ،اراکین اسمبلی

سکیورٹی واپس لینے کا فیصلہ اراکین اسمبلی کو دہشتگردوں کے رحم و کرم پر چھوڑنے کے مترادف ہے ،اجلاس میں اظہارخیال

ہفتہ اپریل 21:11

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 21 اپریل2018ء) بلوچستان اسمبلی کے اراکین نے سپریم کورٹ کی جانب سے اراکین اسمبلی اور دیگر شخصیات سے سکیورٹی واپس لینے کے فیصلے پر تشویش کااظہار کر تے ہوئے کہا ہے کہ عدالت عظمی کے فیصلے سے کئی اہم شخصیات کی جان خطرے میں پڑ گئی ہے ،سکیورٹی واپس لینے کا فیصلہ اراکین اسمبلی کو دہشتگردوں کے رحم و کرم پر چھوڑنے کے مترادف ہے ،یہ بات اراکین اسمبلی سردار عبدالرحمان کھیتران ، شیخ جعفرخان مندوخیل ، میر عاصم کرد گیلو ، حاجی محمد اسلام بلوچ نے اسمبلی اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہی ، اراکین نے کہا کہ چالیس برسوں سے ہم حالت جنگ میں ہیں یہاں بدامنی کے بے شمار واقعات پیش آئے ہیں جن میں سٹنگ ایم پی ایز کوبھی ہدف بنا کر قتل کیا گیا جبکہ دیگر شخصیات کو بھی نشانہ بنایا جاتا رہا ان حالات میں سیکورٹی واپس لینے کے فیصلے سے عوامی نمائندوں میں تشویش پائی جاتی ہے ایسے فیصلے اراکین اسمبلی کو دہشتگردوں کے رحم و کرم پر چھوڑنے کے مترادف ہیں لہذا اس فیصلے کو واپس لیا جانا چاہیے ۔