انسانی غفلت و لاپرواہی نے ماحولیاتی توازن اور ایکوسسٹم کو بری طرح متاثر کردیا، ماہرین زراعت

اتوار اپریل 12:50

فیصل آباد۔22 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء)ماہرین زراعت نے کہاہے کہ انسانی غفلت و لاپرواہی نے ماحولیاتی توازن اور ایکوسسٹم کو بری طرح متاثر کردیا ہے جس کے باعث جلد ہی کرہ ارض کا بیشتر حصہ خشک سالی کی نذر ہوکر چٹیل میدانوں اور ریگستانوں کی تصویر پیش کریگا جو بھوک اور اموات کی شرح میں ہوشربا اضافے کا باعث بن سکتا ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے بتایاکہ تشویشناک ماحولیاتی مسائل‘ فضائی و آبی آلودگی اور تیزی سے کم ہوتے ہوئے جنگلات کی وجہ سے اوزون کی تہہ مسائل کا شکار ہے اور شدید موسمی حالات ، غیرمتوقع بارشوں و سیلابوں کی صورت حال سے زرعی پیداوار میں کمی اور فوڈ سکیورٹی جیسے مسائل کا باعث بن سکتی ہے۔

انہوںنے کہا کہ درجہ حرارت میں ہونیوالے اضافہ اور غیرمتوقع موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے نہ صرف زرعی پیداوارمتاثر ہورہی ہے بلکہ اس سے کسانوں کی آمدن میں بھی خاطر خواہ کمی واقع ہورہی ہے۔انہوں نے سائنسدانوں پر زور دیا کہ دوسرے ماحول دوست اقدامات کے ساتھ ساتھ ہمیں ماحولیاتی و موسمیاتی تغیرات کے تناظر میں فصلات کی کاشت و برداشت کو ازسرنوترتیب دیناہوگا تاکہ بڑھتی ہوئی آبادی کی غذائی ضروریات کونئے چیلنجز سے ہم آہنگ ہوتے ہوئے پورا کیاجا سکے۔