چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ کی مفاد عامہ کے معاملات پر ازخود نوٹسز کی سماعت

اتوار اپریل 16:40

لاہور۔22 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) چیف جسٹس آف پاکستان مسٹرجسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے ہفتہ وار تعطیل کے باوجود اتوار کے روز مفاد عامہ کے معاملات پر ازخود نوٹسز کی سماعت کی۔

(جاری ہے)

دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دئیے کہ وی آئی پیز کی سکیورٹی پر مامور اہلکاروں پر ماہانہ 11 کروڑ 52 لاکھ 50 ہزار کا خرچ آتا تھا یہ رقم صحت اور تعلیم کے لیے خرچ کی جاسکتی تھی ۔ کارروائی کے دوران عدالت کو بتایا گیا کہ اگر تمام اخراجات کو اکھٹا کیا جائے تو یہ رقم 3 ارب سے زائد کی بنتی ہے،گزشتہ روز سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ کو آگاہ کیا گیا تھا وی آئی پیز کی سیکیورٹی مامور 4 ہزار چھ سو دس اہلکاروں کو واپس بلایا گیا ہی.۔