پرائیویٹ سکولزپیر اور منگل بند کو رہیں گے‘کسی صورت ڈی ایم او کی تعیناتی کوتسلیم نہیں کرینگے‘ نوٹیفکیشن فی الفورواپس لیاجائے،سلیم خان

اتوار اپریل 19:00

پرائیویٹ سکولزپیر اور منگل بند کو رہیں گے‘کسی صورت ڈی ایم او کی تعیناتی ..
پشاور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) خیبرپختونخواکے پرائیویٹ تعلیمی ادارے سکروٹنی کمیٹی کیلئے ڈی ایم او کی تعیناتی کیخلاف علامتی ہڑتال کے طور پر پیر اور منگل یعنی دودن کیلئے بندرہیں گے نجی سیکٹرکی تنظیموں نے حکومت پرواضح کیاہے کہ شعبہ تعلیم کوماہرین تعلیم کے سپردکیاجائے ‘وہ کسی صورت ڈی ایم او کی تعیناتی کوتسلیم نہیں کرینگے۔

نوٹیفکیشن فی الفورواپس لیاجائے۔پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک(PEN)کے صوبائی صدرسلیم خان نے ہڑتال کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کے بعد میڈیاسے گفتگوکے دوران بتایاکہ پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی اہمیت سے انکارممکن نہیں نجی سیکٹرحکومت کی عدم سرپرستی کے باوجود بچوں کو بہترین تعلیم فراہم کررہے ہیں لیکن بدقسمتی سے گزشتہ کچھ سالوں سے نجی تعلیمی اداروں کے ساتھ سوتیلی ماں جیساسلوک روارکھاجارہاہے ریاست کااہم شعبہ تعلیم کوبیوروکریسی اورافسرشاہی کی گود میں دیکر ایجوکیشن کی افادیت اوراہمیت کو دبائوپرلگانے کی کوشش کی جارہی ہے ماہرین تعلیم کے بجائے ایک ڈی ایم او افسرکے زیرنگرانی آئی ایم یو سسٹم پورے تعلیمی نظام کیلئے تباہ کن ہے یہ نظام اساتذہ کرام کی تضحیک اور تعلیمی اداروں کی بربادی کاسبب بنے گا جس کیخلاف آج تمام تعلیمی ادارے ایک پیج پر ہیں اورآج کی ہڑتال اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے انہوں نے ہڑتال سے طلبہ اوروالدین کوپہنچنے والی تکلیف پر معذرت کی تاہم انہوں نے واضح کیاکہ نجی سیکٹر قوم کے نونہالوں کی بقاء کی جنگ لڑرہاہے اداروں کی بندش کیخلاف ہیں لیکن حکومت کی ہٹ دھرمی کے باعث آج ہم نے احتجاج کا راستہ اختیارکیاہواہے۔

(جاری ہے)

حکومت کوچاہئے کہ وہ نجی سکولزریگولیٹری اتھارٹی کو تعلیمی ایکٹ کے مطابق من وعمل نافذ کرے اور ڈی ایم او کانوٹیفکیشن فوری طور پرواپس لیکر تعلیم دوست ہونے کاثبوت دے۔

متعلقہ عنوان :