پی ٹی آئی کی حکومت خزانے کو لوٹ کر اب بجٹ پیش کرنے سے کترا رہے ہیں،امیرحیدرخان ہوتی

اتوار اپریل 21:30

شانگلہ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدرو سابق وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت نے خزانے کو لوٹ کر اب بجٹ پیش کرنے سے کترا رہے ہیں اور طر ح طرح کے بہانے بنا کر عوام کو پریشان کیا ہے، پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اپنے آپ کو ایماندار ثابت کرنے کی کوشش کر رہے ہیں اور اپنے ساتھیوں پر بھی ایمانداری کا لیبل لگا رہے ہیں حالانکہ بد قسمتی سے سینٹ الیکشن میں تحریک انصاف کے 20 ممبرز بک گئے اور ایمانداری کا نام و نشان تک نہ رہ پایا ۔

اب عمران خان خاتون ممبرز سے کلام پاک کے واسطے صفائی مانگ رہے ہیں جو ٹھیک کام نہیں ہے ۔میں عمران خان کو کہتا ہوں کہ وہ بھی کلام پاک پر ہاتھ رکھ کر قسم اٹھا کراپنی صفائی پیش کریں کہ باہر سے جن بیرون ملک لوگوں نے تحریک انصاف کو جو چندے دیئے وہ کہاں ہے۔

(جاری ہے)

انھوں نے خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عمران خان سب سے پہلے پرویز خٹک کی صفائی پیش کریں ۔

عوامی نیشنل پارٹی سے پہلے صوبہ خیبر پختونخوا میں نو یونیورسٹیاں تھی اور ہمارے دور حکومت میں دس مزید یونیورسٹیاں قائم کی ہیں جس سے عوامی نیشنل پارٹی کی تعلیمی پالیسی کی وضاحت ہوتی ہے ، عوامی نیشنل پارٹی کا منصوبہ ہے کہ ہر ضلع میں اپنا یونیورسٹی ہو جبکہ تحریک انصاف نے تا حال کوئی ایسی اجتماعی کارکردگی نہیں دکھائی ۔ اگر اے این پی کو ایک موقع اور مل گیا تو ساری دنیا دیکھ لیں گی کہ خیبر پختونخوا دن دگنی رات چوگنی ترقی کر لیں گی۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے اتوار کے روز قومی وطن پارٹی سے عوامی نیشنل پارٹی میں شامل ہونے والے متوکل خان ایڈووکیٹ کی شمولیتی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔۔امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ ہر ضلع میں جاکر پختونوں کو عوامی نیشنل پارٹی کے جھنڈے تلے جمع کرنے کیلئے ہر ممکن تگ و دئو کروں گا، پاکستان ہماراملک ہے اور عوامی نیشنل پارٹی کی کسی صوبے کیساتھ کوئی بد دلی موجود نہیں ہے تاہم اپنے حقوق کی جنگ لڑنے کیلئے متحد ہونا ہوگا ۔

باہم اتفاق و اتحاد کا مظاہرہ کرکے عوامی نیشنل پارٹی کے جھنڈے تلے یکجا ہوکر پختون اپنی حقوق حاصل کر پائیں گے ۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ آئندہ دور حکومت عوامی نیشنل پارٹی کا ہے اور اپنی منصوبہ بندیوں میں بے روزگار نوجوانوں کیلئے روزگارسکیم کا منصوبہ شامل کیا ہے ، اگر حکومت آئی تو روزگار سکیم پر کام شروع کردیں گے جس میں بے روزگار نوجوانوں کو دس لاکھ تک بلا سود قرضہ میرٹ اور قرعہ اندازی کے بنیاد پر فراہم کیا جائیگا ،جو کہ بے روزگاری ختم کرنے کیلئے ضروری ہے اور اس سے ملکی معیشیت اور ترقی پر مثبت اثر پڑے گا۔انہوں نے کہا کہ بہت جلد میں شانگلہ کی طرح سوات اور دیر میں بڑی شمولیتوں کے خوشخبری سنادوں گا ۔