پی آئی اے میں بد انتظامی پر قائد حزب اختلاف خورشید احمد شاہ نے وفاقی سیکرٹری ہوابازی کو خط لکھ دیا

پی آئی اے میں قواعد کی خلاف ورزی کرکے اعلی عہدوں پر بھاری معاوضے کے عوض زائد عمر اور دہری شہریت کے افراد بھرتیاں کی گئیں‘ادارے میں سینئر آفیسرز موجود ہوتے ہوئے بھی انہیں ان عہدوں پر تعینات نہیں کیا گیا، بد انتظامی اور بے ضابطگیوں کی وجہ سے ادارے کے محنتی افسران میں مایوسی پائی جا رہی ہے،پی آئی انتظامیہ اس معاملے پر پی اے سی کو تفصیلی بریفنگ دے‘ خورشید شاہ

اتوار اپریل 23:20

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) پی آئی اے میں بد انتظامی اور بے قائید گیوں پر قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے وفاقی سیکریٹری ہوابازی کو خط لکھ دیا ،خط میں کہا گیا ہے کہ پی آئی اے میں قوائد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اعلی عہدوں پر بھاری معاوضے کے عوض زائد عمر اور دہری شہریت کے افراد بھرتیاں کی گئی ہیں،ادارے میں سینئر آفیسرز موجود ہوتے ہوئے بھی انہیں ان عہدوں پر تعینات نہیں کیا گیا، بد انتظامی اور بے ضابطگیوں کی وجہ سے ادارے کے محنتی افسران میں مایوسی پائی جا رہی ہے،پی آئی انتظامیہ اس معاملے پر پی اے سی کو تفصیلی بریفنگ دے۔

تفصیلات کے مطابق اتوار کو قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے وفاقی سیکریٹری ہوابازی کو خط لکھ دیا ۔

(جاری ہے)

خط میں پی آئی اے کی بد انتظامی اور بے قائید گیوں کی نشاندہی کی گئی ہے۔خط میں کہا گیا ہے کہ پی اے سی کے نوٹس میں یہ آیا ہے کہ پی آئی اے میں قوائد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اعلی عہدوں پر بھاری معاوضے پر بھرتیاں کی گئی ہیں جن میں ساٹھ سال سے زائد عمر اور دہری شہریت کے افراد کوبھی اعلی عہدوں پر تعینات کیا گیا ہے ۔

ان عہدوں میں سی ای او، چیف کمرشل آفیسر، چیف ایچ آر، لیگل کنسلٹنٹ، چیف آئی ٹی افسر وغیرہ شامل ہیں۔ ادارے میں سینئر آفیسرز موجود ہوتے ہوئے بھی انہیں ان عہدوں پر تعینات نہیں کیا گیا۔لیگل کنسلٹنٹ اپنی زمہ دا ریوں کی بجائے انتظامی امور چلا رہے ہیں۔اس کے علاوہ قوائد و ضوابط کی خلاف ورزی کرتے ہوئے جونئیر افسران کو سینئر عہدوں پر بٹھایا گیا ہے۔ان بد انتظامی اور بے ضابطگیوں کی وجہ سے ادارے کے محنتی افسران میں مایوسی پائی جا رہی ہے اور ادارہ تباہی کی طرف جا رہا ہے۔ خط میں مطالبہ کیا گیا کہ اس چیز کا فورا نوٹس لیا جائے اور پی آئی انتظامیہ اس معاملے پر پی اے سی کو تفصیلی بریفنگ دے۔

متعلقہ عنوان :