لندن میں پاکستانی ماڈل لڑکی پر تیزاب پھینکنے والے انگریز مجرم کو 16 سال قید

اتوار اپریل 23:20

لندن میں پاکستانی ماڈل لڑکی پر تیزاب پھینکنے والے انگریز مجرم کو 16 ..
لندن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) برطانیہ میں عدالت نے پاکستانی ماڈل گرل کے چہرے پر تیزاب پھینکنے والے انگریز مجرم کو قصور وار قرار دے کر 10 سال قید کی سزا سنا دی ، 25 سالہ حملہ آور کی شناخت جان ٹوملین کے نام سے کی گئی تھی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ملزم نے لندن میں پاکستانی مسلمان ماڈل لڑکی ریشم خان کے چہرے پر تیزاب پھینک دیا تھا جس سے اس کا پورا چہرہ ہی بگڑگیا تھا۔

وہ اس وقت اپنی اکیسویں سالگرہ منا رہی تھی۔انگریز مجرم نے صرف مانچسٹر یونیورسٹی کی طالبہ ریشم کے چہرے پر ہی تیزاب نہیں انڈیلا تھا بلکہ ان کے ساتھ کار میں سوار ان کے چچا جمیل مختار کے سر پر بھی تیزاب انڈیل دیا تھا ،جس سے ان کے سر کی شکل بگڑ گئی اور گردن پر مستقل نشان پڑ گئے تھے اور وہ اپنے ایک کان کی قوت ِسماعت سے مکمل طور پر ہمیشہ ہمیشہ کے لیے محروم ہوچکے ہیں۔

(جاری ہے)

نگرانی کے لیے نصب کیمروں کی فوٹیج سے اس مجرم کو دونوں پاکستانی نژاد مسلمانوں پر تیزاب پھینکتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔تب برطانوی میڈیا نے تیزاب سے اس سفاکانہ حملے کو مسلمانوں کے خلاف منافرت پر مبنی جرم قرار دیا تھا ۔تاہم اس جرم کے وقوع ہونے کے ایک ماہ کے بعد جب ٹوملین نے خود کو پولیس کے حوالے کیا تھا تو اس نے یہ موقف اختیار کیا تھا کہ وہ ذہنی طور پرمعذور ہے۔بعد میں اس کو باضابطہ طور پر جذباتی طور پر غیر مستحکم قرار دے دیا گیا تھا اور یہ بھی تشخیص کی گئی تھی کہ وہ شخصی عارضے کا شکار ہے۔یہ بھی معلوم ہوا تھا کہ وہ نشے کا عادی تھا اور اس کے بعد اس کی ذہنی حالت خراب ہو گئی تھی۔