فنکار کو کسی بھی کیٹگری میں تقسیم کرنا درست نہیں، مومل شیخ

میں سمجھتی ہوں فنکارمیں اگرٹیلنٹ ہے تواس کوضرورتمام شعبوں میں قسمت آزمانی چاہیے‘انٹرویو

پیر اپریل 11:40

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) اداکارہ وماڈل مومل شیخ نے کہا ہے کہ جس طرح فن کی کوئی سرحد نہیں ہوتی، اسی طرح سچے فنکاروں کوفلم اورٹی وی کی کیٹگری میں تقسیم کرنا درست نہیں ہے۔اپنے ایک انٹرویو میں مومل شیخ نے کہاکہ ایک نوجوان جب شوبز کی دنیا میں قدم رکھتا ہے تواس کے کچھ ٹارگٹ ہوتے ہیں اورآگے بڑھنے کے لیے ایک طریقہ کاربھی اس کے ساتھ ہوتا ہے۔

جس کے تحت وہ کام کرتے ہوئے مختلف شعبوں میں اپنی صلاحیتوں کا لوہامنواتا ہے لیکن بدقسمتی سے ہمارے ہاں جب ایک فنکارکسی ٹی وی ڈرامہ میں مقبول ہوجائے توپھر اس کوٹی وی تک ہی محدود رہنے دیا جاتا ہے۔مومل شیخ نے کہا کہ اسی طرح فلم انڈسٹری میں کسی کواچھا مقام مل جائے توپھروہ ٹی وی پرکام کرنے سے گریز کرتا ہے۔

(جاری ہے)

جس کی وجہ اس کے ’’اسٹارڈم ‘‘ میں کمی مانا جاتا ہے۔

مگرمیرے نزدیک شوبزمیں حد بندی کوئی درست عمل نہیں ہے۔ ایک فنکارکوفنون لطیفہ کے تمام شعبوں میں کام کرنا چاہیے۔ بلاشبہ فلم ایک بڑا اورمقبول میڈیم ہے لیکن لوگوںکی بڑی تعداد ٹی وی ڈرامے دیکھتی اورانہی سے انٹرٹین ہوتی ہے۔ اس لیے اب وہ دورنہیں رہا جب ایک مقبول فنکارکسی ایک میڈیم تک خود کومحدود رکھ لے۔اداکارہ نے کہا کہ ہمارے پڑوسی ملک بھارت کے سپراسٹارز شاہ رخ، سلمان خان اورامیتابھ کے علاوہ بہت سے اب توفلموں کے ساتھ ٹی وی پربھی خوب کام کررہے ہیں۔

اگرٹی وی پرکام کرنے سے ان کی شہرت اورمقبولیت میں کوئی کمی آتی تویہ مقبول فنکارکبھی بھی ٹی وی پرکام کرنے کوترجیح نہ دیتے۔ اس لیے میں سمجھتی ہوں کہ اب وقت بدل چکا ہے اورہمیں اپنی سوچ کوبدلنے کی ضرورت ہے۔ایک سوال کے جواب میں مومل نے کہا کہ میں نے فیشن انڈسٹری میں کام کے ساتھ ٹی وی ، فلم میں ایکٹنگ کی اوربطورمیزبان بھی اپنی صلاحیتوں کومنوایا۔ میں سمجھتی ہوں کہ ایک فنکارمیں اگرٹیلنٹ ہے تواس کوضرورتمام شعبوں میں قسمت آزمانی چاہیے۔