بھارت بدلنے کا عزم، 50 انجینئرز سیاسی میدان میں اتر آئے

نوجوان انجینئرزنے بہوجن آزاد پارٹی کے نام سے سیاسی جماعت رجسٹرکرنے کی درخواست دیدی

پیر اپریل 11:50

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) بھارت میں 50 نوجوان انجینئرز نے اپنی اپنی نوکریوں سے استعفیٰ دے کر سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کر دیا ہے۔۔بھارتی ٹی وی کے مطابق انڈین انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی(( آئی آئی ٹی) کے فارغ التحصیل 50 نوجوان انجینئرز ملک کے پچھڑے طبقات اور اقلیتوں کے حقوق کی جنگ لڑنے کیلئے میدان سیاست میں اتر آئے۔

50 انجینئر نوجوانوں کے گروپ کے سربراہ نوین کمار نے بھارتی الیکشن کمیشن میں بہوجن آزاد پارٹی کے نام سے سیاسی جماعت رجسٹرڈ کرنے کی درخواست دیدی ہے۔میڈیا سے گفتگو میں نوین کمار نے کہا کہ مختلف شہروں کی آئی آئی ٹیز سے تعلیم پا کر ملازمتوں میں مگن ہم 50 نوجوانوں نے ملک کے دلتوں،اقلیتوں اور دیگر پچھڑے ہوئے طبقات کے حقوق کیلئے اپنی نوکریاں چھوڑ دی ہیں اورسیاست کا آغاز کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے بڑے مقصد کیلئے اپنی ملازمتیں چھوڑی ہیں،ہم جلدی میں نہیں،سیاسی جماعت رجسٹرڈ ہونے کے بعد آئندہ برس بہار کے انتخابات میں حصہ لیں گے اور پھر 2020ء کے عام انتخابات میں اپنی پارٹی کو لوگوں تک لے کر جائیں گے۔سیاسی میدان میں قدم رکھنے والے ان نوجوان انجینئرز نے اپنا ایک پوسٹر بھی جاری کیا ہے،جس میں بی آر امبیڈکر،سبھاش چندر بوس اور اے پی جے عبدالکلام کی تصاویر نمایاں ہیں۔