سی پیک تین سال سے بھی کم عرصہ میں ایک حقیقت بن چکا ہے، یہ صرف موجودہ نہیں آئندہ نسلوں کے لئے بھی شاندار ثمرات کا حامل منصوبہ ہے، اس منصوبے نے پاکستان کو مجموعی ترقی و خوشحالی کے لئے مضبوط بنیاد فراہم کی ہے، پاکستان سمیت وسیع تر خطہ اس منصوبہ سے مستفید ہوگا

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کراچی میں ’’سی پیک سمٹ‘‘ سے خطاب

پیر اپریل 14:14

سی پیک تین سال سے بھی کم عرصہ میں ایک حقیقت بن چکا ہے، یہ صرف موجودہ ..
کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری ((سی پیک)) صرف موجودہ ہی نہیں بلکہ آئندہ نسلوں کے لئے بھی شاندار ثمرات کا حامل منصوبہ ہے جس سے پاکستان سمیت وسیع تر خطہ مستفید ہوگا۔ انہوں نے یہ بات پیر کو یہاں ’’سی پیک سمٹ‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس کا اہتمام ڈان میڈیا گروپ نے وزارت منصوبہ بندی و ترقی کے اشتراک سے کیا۔

وزیراعظم نے کہاکہ تین سال سے بھی کم عرصہ میں یہ منصوبہ ایک حقیقت بن چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس منصوبے نے پاکستان کو مجموعی ترقی و خوشحالی کے لئے ایک مضبوط بنیاد فراہم کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سی پیک کے ثمرات صرف پاکستان تک محدود نہیں بلکہ افغانستان اور مغربی چین سمیت دیگر ممالک بھی اس منصوبے سے فائدہ اٹھائیں گے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ درحقیقت سی پیک خطے میں تمام ممالک کے لئے ایک موقع ہے اور یہ بنیادی ڈھانچے اور توانائی کے شعبوں پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ سی پیک کے تحت پاکستان میں بجلی کی ٹرانسمیشن لائنز بچھائی جا رہی ہیں اور خصوصی اقتصاد ی زونز کے قیام سے چین اور دنیا بھر سے کاروبار کے مواقع کو فروغ ملے گا اور تجارت میں نمایاںاضافہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت منصوبہ جات پر اقتصادی موزونیت اور ماحولیاتی تحفظ کے دو بنیادی اصولوں کو مد نظررکھتے ہوئے عملدرآمد کیا گیا۔

انہوں نے کہاکہ سی پیک نے پاکستان کو ٹیکنالوجی اور زراعت جیسے مضبوط شعبوں کو تقویت دینے کے لئے ایک پلیٹ فارم مہیا کیا اور اس سے روزگار کے مواقع پیدا اور غربت میں کمی واقع ہوگی۔ وزیراعظم نے کہاکہ اس کانفرنس میں شرکت کرنا ان کے لیے اعزاز کی بات ہے اور سی پیک منصوبہ پاکستان اور چین کے درمیان ایک مضبوط دوستی کا مظہر ہے۔ انہوں نے کہاکہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ چینی صدر شی جن پنگ کا وژن تھا اور وہ اس منصوبے کے ذریعے چین کو مشرقِ وسطیٰ، وسطی ایشیا سمیت دیگر خطوں کے ساتھ منسلک کرنے کے خواہاں ہیں۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز کا قیام پاکستان اور چین سمیت دیگر ممالک کے کاروباری افراد کو مواقع فراہم کریں گے اس سے قومی معیشت کو تقویت ملے گی۔ اس سے قبل وزیر اعظم نے افغانستان میں دہشت گردی کے حالیہ واقعہ کی پرزور مذمت کی جس میں 50 سے زیادہ افراد جاں بحق ہوئے۔