لگتا ہے کہ فاروق ستار کی کھوئی ہوئی یادداشت واپس آ رہی ہے،انیس احمد ایڈوکیٹ

فاروق ستار پورا سچ بولیں اور بانی ایم کیو ایم کے حوالے سے کھل کر عوام کو حقائق سے آگاہ کریں،سینئر وائس چیئرمین پی ایس پی

پیر اپریل 17:32

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) پاک سرزمین پارٹی کے سینئر وائس چیئرمین انیس ایڈوکیٹ نے فاروق ستار کے رات گئے انکشافات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جس دن سے چیئرمین سیدمصطفی کمال نے پی ایس پی کے دروازے ان پر ہمیشہ کیلئے بند کر دیئے ہیں،ایسا لگتا ہے کہ فاروق ستار کی کھوئی ہوئی یادداشت واپس آ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ۴ فروری سے پی آئی بی کالونی گروپ اور بہادرآباد گروپ کے درمیان جاری قیادت کی رسہ کشی میں ایک دوسرے پر کرپشن سمیت دیگر سنگین نوعیت کے انتظامی بدعنوانیوں اور غیر اخلاقی الزامات اور حقائق پر سے دونوں جانب سے پردہ اٹھایا جا رہا ہے۔

شرم کی بات ہے کہ عوامی نمائندہ ہونے کی دعویدار جماعت کے انتظامی و قیادت کے معاملات عوامی سطح پر حل کرنے کیبجائے عدالتوں میں لے جایا گیا ہے۔

(جاری ہے)

فاروق ستار ۲۳ اگست ۲۰۱۶ کو ایک بارہویں کھلاڑی کی حیثیت سے میدان میں اترے اور خواہش کہ ٹیم کی کپتانی ان کے نام ہو جائے۔ انیس ایڈوکیٹ نے کہا کہ عوامی سطح پر فاروق ستار اور بہادرآباد گروپ کی ایک کے بعد ایک ناکامی اور پارٹی کے دونوں گروپوں کے درمیان قیادت کو لے کر سیاسی، انتظامی و قانونی اختلافات دراصل ’’قدرت کا مکافات عمل‘‘ ہیں۔

انیس ایڈوکیٹ نے فاروق ستار کو مشورہ دیا کہ اب جب کہ ان کی کھوئی ہوئی یادداشت واپس آ رہی ہے تو وہ آدھا سچ نہ بولیں بلکہ پورا سچ بولیں اور بانی ایم کیو ایم کے حوالے سے کھل کر عوام کو حقائق بتائیں۔ عوام انتہائی باشعور ہیں، حالات کو بغور دیکھ اور سمجھ بھی رہے ہیں اور اپنے روزمرہ مسائل کے حل کیلئے ان کی امیدیں بہادر، باکردار، پرخلوص اور اہل قیادت سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی سے جڑ چکی ہیں اور آنے والیالیکشن میں پی ایس پی پاکستان کی بڑی سیاسی جماعت بن کر ابھرے گی۔