کرن بالا(آمنہ) کو واپس بھارت آنے پر اپنانے کو تیار ہیں،سابق سسر ترسیم سنگھ

وزارت خارجہ سے رابطہ کرکے کرن بالا کوبھارت واپس لانے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی،سابق ایم پی اویناش رائے کھنہ

پیر اپریل 20:11

کرن بالا(آمنہ) کو واپس بھارت آنے پر اپنانے کو تیار ہیں،سابق سسر ترسیم ..
ہوشیار پور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) اسلام قبول کر کے پاکستانی نوجوان سے شادی کرنے والی بھارتی یاتری کرن بالا(آمنہ) کے سسر ترسیم سنگھ نے کہا ہے کہ اسے بھارت واپس آنے پر اپنا لیا جائے گا، وزارت خارجہ سے رابطہ کرکے کرن کوبھارت واپس لانے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ بھارتی میڈیا کے مطابق اسلام قبول کر کے پاکستانی نوجوان سے شادی کرنے والی بھارتی کرن بالا(آمنہ) کے سسر ترسیم سنگھ نے کہا ہے کہ کرن بالا اگر بھارت واپس آ جائے تو اسے اپنا لیا جائے گا۔

لاہور میں مذہب تبدیل کرکے مسلم نوجوان سے شادی کرنیوالی کرن بالا(آمنہ بی بی) 3بچوں اندر جیت کور ، ارجن و گورمکھ سنگھ کی والدہ ابھی بھی پاکستان سے لو ٹ آئے تو ہم اپنانے کو تیار ہیں۔یہ بات کرن بالا کے سسر ترسیم سنگھ نے میڈیا اور سابق ایم پی اویناش رائے کھنہ سے کہی۔

(جاری ہے)

اویناش نے یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ وزارت خارجہ سے رابطہ کرکے کرن کو ہند واپس لانے کی ہر ممکن کوشش کرینگے۔

لاہور ہائیکورٹ کے باہر کرن بالا کے لئے جس طرح کے نعرے لگائے گئے اٴْس پر افسوس ہوا۔واضح ہو کہ گزشتہ دنوں تہوار کے موقع پر گڑھ شنکر کی رہنے والی 3بچوں کی بیوہ ماں کرن بالا پاکستان پہنچ کر دائرہ اسلام میں داخل ہوئی اور شادی کرنے کے بعد نوجوان کے ساتھ لاہور چلی گئی۔واضح رہے کہ کرن بالا کے سسر ترسیم سنگھ نے کرن بالا پر پاکستانی خفیہ ایجنسی سے تعلقات کا الزام عائد کیا تھا۔