پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت خیبرپختونخوا کی عوام کیلئے کوئی قابل ذکر تبدیلی نہ لاسکی ،ہم مثبت تبدیلی لائینگے،انتخاب خان چمکنی

پیر اپریل 20:12

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) مشیر امیر جماعت اسلامی پاکستان و چیئرمین مشاورتی کونسل جے آئی خیبر پختونخوا انتخاب خان چمکنی نے کہاہے کہ اس وقت حکومت اسمبلی کی آئینی مدت پوری کرنے کے نزدیک ہے ،اگر پی ٹی آئی حکومت کی پچھلے پانچ سالوں کی کارکردگی دیکھیں تو سوائے جھوٹے وعدوں کے علاوہ عملاً خیبرپختونخوا کی عوام کیلئے کوئی قابل ذکر تبدیلی نہ لاسکیں جو کہ اِنکی حکومت کے دعوے تھے کہ ہم اس صوبے میں ایک مثبت تبدیلی لائینگے۔

وہ پیر کو صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہاکہ آج پانچ سال بعد حکومت کی کارکردگی مایوس کن ہے، ہر شعبے میں خصوصاً تعلیم ، صحت ، زراعت ، انڈسٹر یز ،اور پویس وغیر ہ کئی پے بھی کوئی نمایاں مثبت تبدیلی نہ لاسکیں۔

(جاری ہے)

اور جہاں تک اِنکے جھوٹے بلند وعدوں کا ذکر کیا جائے تو اس صوبے کی حالت پورپ اور امریکہ کی طرح ہونی چاہیے ، کیونکہ کپتان سے لے کر انکے ہر کھلاڑی نے صوبے کا نقشہ یو رپ کی طرح پیش کیا ہے جسمیں تعلیم اورصحت کے ایمرجنسی ریفارمز اور پولیس کے ریفارمز ، صر ف خیالوں، نعروں اور سوشل میڈیا تک محدودہے۔

زمینی حقائق اس کے بر عکس ہے ، خیبر پختونخواہ کے عوام کی زندگیوں میں کوئی مثبت تبدیلی کی بجائے منفی اثرات نمایاں ہیں جس سے لوگوں کے دِلوں میں مایوسی اور افسوس کے سِوا کچھ نہیں۔ انتخاب خان چمکنی نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی حکومت نے آخر میں بی آر ٹی کا اتنا بڑا منصوبہ بغیر کسی پلاننگ اور انجینئر نگ ڈیزائن کے شروع کرنا ۔اس شہر کے عوام کیساتھ ناانصافی ہے کیونکہ پورا پشاور کنڈارات میں تبدیل ہو گیا ہے جو کہ شہر کے ساتھ پچھلے چار سالوں میں صوبے کے سینئر وزیر بلدیات و سینئر رہنماء جماعت اسلامی عنایت اللہ خان نے صوبے میں جگہ جگہ گرین بلٹس، سڑکوں کے مرمت اور دیگر ایسے منصوبے شروع کرنے سے صوبہ خصوصاً پشاور کو خوبصورت اور صاف ستھرا لگنے دیا تھا ، لیکن آج بی آر ٹی کے بغیر پلاننگ منصوبے نے اس شہر کی حالت بتر کر دی ہے۔

یہاں تک کے بی آر ٹی کے منصوبے سے مایوسی ہونے لگی ہے ،یوں لگتا یوں ہے پی ٹی آئی خیالوں اور سوشل میڈیا کہ علاوہ کہیں تبدیلی نہیں لائی ۔