اسلام ہی مسائل کا حل ،آئین پاکستان ریاست چلانے کی رہنمائی دیتاہے ، لیاقت بلوچ

عوام کا اعتماد، ملک کا استحکام و ترقی شفاف ، غیر جانبدار اور بروقت انتخاب سے ہے،سیکرٹری جنرل ایم ایم اے

پیر اپریل 21:21

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) جماعت اسلامی پاکستان اور متحدہ مجلس عمل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے گوادر پریس کلب ہال میں ورکرز کنونشن اور جمعیت علمائے اسلام تربت کے امیر خالد ولید سیفی کے عشائیہ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اسلام ہی انسانوں کے مسائل کا حل ہے ۔ آئین پاکستان ریاست چلانے کی رہنمائی دیتاہے لیکن حکمران اور مقتدر طبقہ عمل نہیں کرتے ۔

آئین اور نظریہ پاکستان پر عمل نہ کرنے والے حکمران دہشتگرد ہیں ۔ ظلم ، جبر اور لاقانونیت کی وجہ سے نوجوانوں میں ردعمل پیداہوتاہے۔ بلوچستان کے عوام ،نوجوانوں اور خواتین کو تعلیم ،صحت ،روزگار اور باعزت زندگی کا حق دیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ گوادر سی پیک کا مرکز و محور ہے ۔ گوادر کے عوام کو مطمئن کیا جائے ۔

(جاری ہے)

مارشل لاء حل نہیں ہے ۔ عوام کا اعتماد، ملک کا استحکام و ترقی شفاف ، غیر جانبدار اور بروقت انتخاب سے ہے ۔

سینیٹ انتخابات کی خرید و فروخت نے سب کے چہرے بے نقاب اور جمہوریت کے چہرے کو داغدار کردیاہے ۔سیکولر مفادپرست اسلوب سیاست ناکام ہے ۔ ملک کو نئے بیانیہ ، صاف ستھری سیاست اور نئی صف بندی کی ضرورت ہے ۔ دینی جماعتیں ظلم و جبر کے نظام کے خاتمہ کے لیے عوا م کی نجات دہندہ ہیں ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل جماعت اسلامی ، جمعیت علمائے اسلام ، جمعیت علمائے پاکستان ، مرکزی جمعیت اہلحدیث ، اسلامی تحریک جیسی ملک گیر دینی سیاسی جماعتوں کا باوقار اتحاد ہے ۔

تمام مسالک کے علماء اور ہمدرد اس اتحاد کے گرد جمع ہو جائیں گے ۔ انتخابات 2018 ء میں متحدہ مجلس عمل کا کلیدی کردار ہوگا ۔ 2 مئی کو اسلام آباد میں قومی ورکرز کنونشن میں متحدہ مجلس عمل کے مرکزی قائدین منشور اور انتخابی حکمت عملی کا اعلان کریں گے ۔ اسلام اور پاکستان کے دشمنوں کے مقابلہ کے لیے ملک گیر رابطہ عوام مہم کا آغاز کیا جائے گا ۔ عشائیہ میں مولانا عبدالحق ہاشمی ، مولانا ہدایت الرحمن ، سعید احمد بلوچ ، محمد یاسین ، مولانا محمد خلیل اور مولانا لیاقت بلوچ نے بھی خطاب کیا ۔