ملتان،گندم خریداری کے سلسلے میں27ہزار سے زائدکاشتکاروں کی درخواستیںموصول

پیر اپریل 23:29

ملتان ۔ 23اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) ڈپٹی کمشنر محمد سیف انور نے کہا ہے کہ گندم خریداری کے سلسلے میں درخواست وصولی کا مرحلہ بااحسن مکمل ہوچکا ہے ، جس میں 27ہزار سے زائد کاشتکاروں کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں، جس میں سے تحصیل مظفرگڑھ میں 10ہزار جبکہ تحصیل کوٹ ادو میں 17ہزار درخواستیں وصول ہوئی ہیں، تمام درخواستوں کااندراج کرنے کے بعد تصدیق کی ہوچکی ہے، یہ بات انہوں نے گندم خریداری کے سلسلے میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی، اے ڈی سی ریونیو عطاء الحق، اسسٹنٹ کمشنر مظفرگڑھ ظہور حسین بھٹہ اور ڈی ایف سی ملک محمد ممتاز سمیت سنٹر کواڈینیٹرز نے شرکت کی،ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ صوبائی کابینہ برائے گندم خریداری کے فیصلے کے بعد فی ایکڑ بار دانہ کی تعداد مقرر کی جائے گی جس کے فوراً بعد بار دانے کی تقسیم کا عمل شروع کردیا جائے گا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ہر مرکز پر روزانہ 100سے 300کاشتکاروں کو باردانہ تقسیم کیا جائے گا، ہر سنٹر پر ترجیحات کے لحاظ سے اگلے 5دن تک کی کاشتکاروں کی فہرستیں آویزاں کردی جائیں گی تاکہ کاشتکاراپنی باری پر مقرر تاریخ کو آئیں اور اپنا باردانہ باآسانی وصول کرسکیں،ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ درخواست دینے والے تمام کاشتکاروں کوباردانہ فراہم کیا جائے گا، تاہم ہر کاشتکار کو 10ایکڑ تک باردانہ فراہم کیا جائے گا، انہوں نے سنٹر کواڈینیٹرز کو ہدایت کی کہ گندم خریداری کی سلسلے میں حکومت پنجاب کی پالیسی کو ہر ممکن مد نظر رکھا جائے ، کسی کاشتکار کو شکایت کو موقع نہ دیا جائے ، ہر کاشتکار کو اس کی استحقاق کے مطابق باردانہ فراہم کیا جائے ڈپٹی کمشنر نے مزید کہا کہ تمام درخواست دھندگان کو بذریعہ موبائل میسج کیا جائے گا کہ ان کا باردانہ منظور ہوچکا ہے، کسی کاشتکار کو کم یا زیادہ باردانہ فراہم نہیں کیا جائے گا، کسی کاشتکار کا باردانہ کسی دوسرے شخص کو جاری نہیں کیا جائے گا، انہوں نے اسسٹنٹ کمشنران کو ہدایت کی کہ وہ اپنی اپنی تحصیلوں میں قائم گندم خریداری مراکز کا معائنہ کریں اور کاشتکاروںکی شکایات کافوری ازلہ کریںوہ خود بھی مختلف اوقات میں مختلف مراکز کا معائنہ کرتے رہیں گے۔