وفاقی دارالحکومت کے سیکٹر جی 13 میں پانی کا بحران شدت اختیار کرگیا، رہائشی علاقے میں گزشتہ دو ہفتوں سے پانی کی فراہمی بند

فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہائوسنگ فائونڈیشن لوگوں کو پانی فراہم کرنے میں ناکام، لوگ بھاری رقم کی ادائیگی پر ٹینکروں کے ذریعے پانی خریدنے پر مجبور

منگل اپریل 13:00

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے سیکٹر جی 13میں پانی کا بحران شدت اختیار کرگیا، سیکٹر کے بیشتر مکینوں کو گزشتہ دو ہفتوں سے پانی کی فراہمی بند ہے۔ علاقے کے مکینوں نے منگل کو بتایا کہ فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہائوسنگ فائونڈیشن نے سیکٹر جی تھرٹین کے رہائشیوں کو8 اپریل کو پانی کی فراہمی بند کردی۔

شہریوں نے الزام لگایا کہ حکام کی جانب سے اس صورتحال میں ٹینکر مافیا کو فائدہ پہنچایا جارہا ہے اور فائونڈیشن کے ٹینکروں کے ذریعے من پسند افراد کو پانی فراہم کیا جارہا ہے۔ مقامی شہریوں نے بتایا کہ ہائوسنگ فائونڈیشن کے حکام لوگوں کو پانی فراہم کرنے کی بجائے انہیں رقم کی ادائیگی پر ٹینکروں کے ذریعے پانی خریدنے پر مجبور کررہے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے وزیر اعظم اور وفاقی وزیر ہائوسنگ و تعمیرات سے مطالبہ کیا کہ G-13 کے رہائشیوں کے لئے پانی کا مسئلہ مستقل بنیادوں پر حل کیا جائے اور متعلقہ حکام سے جواب طلب کیا جائے۔ مکینوں نے مطالبہ کیا کہانہیں ہفتے میں کم از کم 2بار پانی سپلائی کیا جائے۔ انہوں نے سوال اٹھایا کہ G-13 میں بننے والے کثیر المنزلہ لائف سٹائل ریذیڈنسی کو اس صورتحال میں کیسے پانی فراہم کیا جائے گا جبکہ علاقہ کے موجودہ مکینوں کو پانی کی سپلائی میں بندش کا سامنا ہے۔

لوگوں نے بتایا کہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے گیٹ وے سیکٹر جی 13میں صفائی کی ناقص صورتحال‘ سٹریٹ لائٹس کی عدم موجودگی اور گندے پانی کی نکاسی کا نظام انتہائی خراب ہے جسے ابھی تک بہتر نہیں بنایا جاسکا ہے۔انہوں نے بتایا کہ سیکٹر جی 13اور جی 14کو ہائوسنگ فائونڈیشن کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے۔ دریں اثناء ہائوسنگ فائونڈیشن کے حکام کا کہنا ہے کہ بجلی کے ٹرانسفارمر کی خرابی کے باعث پانی کی فراہمی میں تعطل آیا ہے جسے جلد ٹھیک جائے گا تاہم مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ سیکٹر کو وزارت ہائوسنگ و تعمیرات کے رحم وکرم پر چھوڑ دیا گیا ہے۔

انہوں نے فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہائوسنگ فائونڈیشن کے ڈائریکٹر جنرل وقاص علی محمود سے مسئلہ کے حل کیلئے ذاتی دلچسپی لینے کا مطالبہ کیا۔

متعلقہ عنوان :