امریکی سینیٹ کی خارجہ امور کمیٹی نے پومپیو کی بطوروزیرخارجہ نامزدگی کی توثیق کردی

سینیٹ بھی رواں ہفتے نامزدگی کی توثیق کردے گا، مائیک پومپیوامریکہ کے 70ویں وزیرخارجہ کا عہدہ سنبھال لیں گے

منگل اپریل 13:59

واشنگٹن ڈی سی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) امریکی سینیٹ کی امورِ خارجہ کمیٹی نے سی آئی اے کے سربراہ مائیک پومپیو کی بطور وزیرِ خارجہ نامزدگی کی توثیق کردی ہے۔پومپیو کی نامزدگی کی توثیق ریاست کنٹکی کے ری پبلکن سینیٹر رینڈ پال کی حمایت کی بدولت ممکن ہوسکی ہے جنہوں نے اور کمیٹی کے تمام 10 ری پبلکن ارکان نے اس سے قبل پومپیو کے خلاف ووٹ دینے کا اعلان کیا تھا۔

میڈیارپورٹس کے مطابق ووٹنگ سے چند لمحے قبل سینیٹر رینڈ پال مائیک پومپیو کی مخالفت سے دستبردار ہوگئے اور یوں ان کے ایک ووٹ کی بدولت سینیٹ کمیٹی نے پومپیو کی نئے وزیرِ خارجہ کے طور پر نامزدگی کی توثیق کردی۔ووٹنگ سے قبل سینیٹر پال نے اعلان کیا کہ مائیک پومپیو اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ان کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے جس کے بعد انہوں نے پومپیو کے حق میں ووٹ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

(جاری ہے)

اجلاس میں 21 رکنی کمیٹی کے رینڈ پال سمیت 10 ری پبلکن ارکان نے پومپیو کی نامزدگی کی توثیق کی جب کہ کمیٹی کے 10 میں سے نو ڈیموکریٹ ارکان نے ان کی مخالفت میں ووٹ دیا۔کمیٹی میں شامل گیارہویں ری پبلکن رکن اور جارجیا سے منتخب سینیٹر جونی آئزکسن اجلاس میں شریک نہیں تھے جس کی وجہ سے ریاست ڈیلاور سے منتخب ڈیموکریٹ سینیٹر کرس کونز نے ری پبلکن ارکان کی درخواست پر ووٹنگ کے دوران موجود ہونے کے باوجود اپنا ووٹ کا حق استعمال نہیں کیا تاکہ صرف ایک ووٹ کی اکثریت سے پومپیو کی نامزدگی کی توثیق کی جاسکے۔

اگر رینڈ پال اپنا فیصلہ نہ بدلتے یا جونی آئزکسن بھی دیگر ڈیموکریٹ ارکان کی طرح مائیک پومپیو کی مخالفت میں ووٹ دیتے تو پومپیو امریکہ کی حالیہ تاریخ کے پہلے نامزد وزیرِ خارجہ ہوتے جن کی نامزدگی کو سینیٹ کمیٹی کی توثیق حاصل نہیں ہوتی۔امورِ خارجہ کمیٹی کی توثیق کے بعد امکان ہے کہ سینیٹ کا پورا ایوان بھی رواں ہفتے مائیک پومپیو کی نامزدگی کی توثیق کردے گا جس کے بعد وہ اختتامِ ہفتہ امریکہ کے 70 ویں وزیرِ خارجہ کی ذمہ داریاں سنبھال لیں گے۔