کوٹلی‘اکرام اغواء کیس، ملک یوسف،چوہدری محبوب ،ملک ظفر اور آفتاب انجم نے مرکزی ملزم اویس نواز پر ’’غنڈہ ایکٹ‘‘لگانے کا مطالبہ کردیا

منگل اپریل 14:52

کوٹلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) اکرام اغواء کیس، ملک یوسف،چوہدری محبوب ،ملک ظفر اور آفتاب انجم نے مرکزی ملزم اویس نواز پر ’’غنڈہ ایکٹ‘‘لگانے کا مطالبہ کردیا۔ مختلف سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے رہنماؤں نے ڈی ایس پی خواجہ عبدالقیوم کے سامنے موقف اختیار کیا کہ اویس نواز کے خلاف لڑائی جھگڑے کا یہ پانچواں مقدمہ درج ہوا ہے،قانون کے مطابق ملزم پر غنڈہ ایکٹ لگنا چاہیے۔

ڈی ایس پی نے اویس نواز پر درج مقدمات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ معاملے کو غلاف میں ڈالنے کی کوشش نہیں کرینگے،اگر قانون کے مطابق مزید دفعات کے اندراج کی گنجائش ہوئی تو رعائت نہیں بھرتیں گے۔تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ گزشتہ روز تاجر اکرام اصغر کے اغواء کا معاملہ لیکرمسلم لیگ(ن) کے رہنما ملک یوسف، ظفر ملک، پی ٹی آئی کے رہنما چوہدری محبوب اور پیپلزپارٹی کے رہنما آفتاب انجم نے میڈیا نمائندگان کی موجودگی میں ڈی ایس پی کوٹلی خواجہ عبدالقیوم سے ملاقات میں مطالبہ کیا کہ ممبراسمبلی ملک نواز خان کے بیٹے اویس نواز پر اکرام اصغر کے اغواء کا یہ پانچواں مقدمہ درج ہوا ہے اس سے قبل اویس پر لڑائی جھگڑے کے 4مقدمات درج ہوچکے ہیں اور حیرت کی بات یہ ہے کہ ملک نواز کا بیٹا ایک بھی مقدمہ میں گرفتار نہیں کیا جا سکا ہے۔

(جاری ہے)

سیاسی رہنماؤں کا کہنا تھا کہ جس شخص کے خلاف چار مقدمات درج ہو جائیں قانون کے مطابق اُس کے خلاف ’’غنڈہ ایکٹ‘‘لگتا ہے ،اویس نواز پر بھی قانون کے مطابق غنڈہ ایکٹ لگایا جائے۔سیاسی رہنماؤں کے مطالبہ پر ڈی ایس پی خواجہ عبدالقیوم نے یہ تصدیق کہ اویس نواز پر پہلے چار مقدمات کا اندراج ہو چکا ہے مگر دیکھنا یہ ہے کہ قانون اس سلسلہ میں کیا کہتا ہی ۔

ڈی ایس پی کا کہنا تھا آپ لوگ یقین رکھیں ہم کسی شخص کے بڑے پن سے متاثر ہو کر اس مقدمہ پر ’’غلاف‘‘نہیں چڑھائیں گے بلکہ قانون کی رہنمائی سے اگر ملزمان یا ملزم پر مزید کوئی دفعات لگنے کی گنجائش ہوئیں تو کسی سے رعائت بھی بھرتی جائے گی۔دیکھنا اب یہ ہے سیاسی رہنماؤں کی طرف سے پولیس سے کیا جانے والا مطالبہ کس قدر قانونی ہے اگر قانون میں اس بات کی گنجائش ہے تو کیا پولیس اپنی ذمہ داری ادا کر پائے گی یا نہیں واضح رہے کہ اکرام اصغر کے اغواہ میں نامزد ملزمان ملک نواز کے بیٹے اویس نواز سمیت 5افراد کے خلاف 21اپریل2018کی شام 4:45بجے زیر دفعاتAPC34,365کے تحت مقدمہ تو درج کرلیا تھا مگر 24اپریل کی سہ پہر تک پولیس ملزمان کو گرفتار کرنے میں ناکام رہی تھی۔

ملزمان کی گرفتاری کے حوالے سے میڈیا کے رابطہ کرنے پر ایس ایچ او تھانہ پولیس کوٹلی طاہر ایوب کا کہنا تھا کہ ملزمان شہر چھوڑ کر فرار ہوچکے ہیں ،،پولیس متعدد بار ملزمان کی گرفتاری کے چھاپے مار چکی ہے اور یہ سلسلہ تاحال جاری ہے۔ اُنھوں نے اُمید کا اظہار کیا کہ آج 25اپریل کو ملزمان کی گرفتاری کے حوالے سے پیشرفت سامنے آ جائے گی۔

متعلقہ عنوان :