اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصی کے پانچ مقامی محافظوں کو عدالت میں پیش کردیا

صہیونی حکام سوچے سمجھے منصوبے کے تحت مسجدا قصیٰ کے محافظوں کو ہراساں کررہے ہیں، الشیخ عمر الکسوانی

منگل اپریل 18:02

مقبوضہ بیت المقدس (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) اسرائیلی پولیس نے مسجدا قصیٰ کے پانچ مقامی محافظوں کو عدالت میں پیش کردیا۔اطلاعات کے مطابق اسرائیلی پولیس نے حراست میں لئے گئے قبلہ اول کے پہرے داروں فادی علیان، لوئی ابو السعد، خلیل الترھونی، حمزہ النبالی اور عرفات نجیب کو شاہراہ صلاح الدین پر قائم حراستی مرکز سے متصل عدالت میں پیشی کے بعد تفتیش کے لیے لے جایا گیا۔

(جاری ہے)

مسجد اقصیٰ کے ڈائریکٹر الشیخ عمر الکسوانی نے کہا ہے کہ صہیونی حکام کی طرف سے ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت مسجدا قصیٰ کے محافظوں کو ہراساں کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صہیونی حکام مسجد اقصیٰ کی خدمت اور اس کی حفاظت کرنے والے فلسطینیوں کو نفسیاتی اورجسمانی تشدد کا نشانہ بنا کر انہیں قبلہ اول سے دور کرنے کی مذموم کوشش کررہے ہیں۔

ادھر اسرائیلی فوج اور پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں 135 یہودی آبادکاروں نے مسجد اقصیٰ میں گھس کر مقدس مقام کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔ یہودی آباد کار جن میں طلباء اور انٹیلی جنس اداروں کے ارکان بھی شامل تھے مراکشی دروازے سے مسجد میں داخل ہوئے۔ اس موقع پر اسرائیلی پولیس نے فلسطینی مسلمان نمازیوں کو قبلہ اول میں داخل ہونے سے روک دیا گیا تھا۔

متعلقہ عنوان :