کراچی، اے وی سی سی اور سی پی ایل سی کی مشترکہ کارروائی ،حیدرآباد سے مغوی بچہ بازیاب ،ملزم گرفتار

منگل اپریل 19:26

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) اے وی سی سی اور سی پی ایل سی نے سائٹ سپرہائی وے کے علاقے میں کارروائی کرتے ہوئے 7سالہ بچے کے اغوا میں ملوث ملزم کو تاوان کی ادائیگی کے دوران گرفتار کرلیا ۔ملزم کی نشاندہی پر مغوی بچے کو حیدرآباد سے بازیاب کرالیا گیا ۔ملزم کا دوسرا ساتھی تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا ۔

یہ بات ڈی آئی جی سی آئی اے امین یوسف زئی نے منگل کو اپنے دفتر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتائی ۔انہوںنے بتایا کہ 18اپریل کو مسلح ملزمان نے پریڈی کے علاقے سے 7سالہ محمد عیسیٰ ولد نور الحق کو اغوا کیا جس کے مقدمہ نمبر 170/2018درج کرکے تفتیش کا آغاز کیا گیا ۔ملزمان نے بچے کی رہائی کے لیے اہل خانہ سے 5لاکھ روپے تاوان کا مطالبہ کیا ۔

(جاری ہے)

بچے کی بازیابی کے لیے ایک خصوصی ٹیم تشکیل دی گئی جس نے ایک مشتبہ شخص احسان کو حراست میں لیا جس نے ملزمان کے حوالے سے اہم معلومات فراہم کٰں ۔

ملزمان نے مغوی کے والد کو پیر کو اور منگل کی درمیانی شب تاوان کی ادائیگی کے لیے جمالی پل مین سپرہائی سروس روڈ سائٹ سپرہائی وے پر بلایا جہاں پولیس کی خصوصی ٹیم اور سی پی ایل سی نے کامیاب کارروائی کرتے ہوئے اغوا کار لیاقت کو دوران ادائیگی تاوان گرفتا رکرکے اسلحہ برآمد کرلیا ۔ملزمان کی نشاندہی پر حیدرآباد کے علاقے لطیف آباد میں گلستان ہوٹل سے مغوی بچے عیسیٰ کو بھی بازیاب کرالیا گیا ۔

ملزم کا دوسرا ساتھی تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا جس کی تلاش کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں ۔گرفتار ملزم لیاقت ولد عبدالحق کاکڑ نے دوران تفتیش بتایا کہ وہ ضلع قلعہ عبدالہ کا رہائشی اور یاسر کمپلیکس صدرمیں چائے کے ہوٹل پر کام کرتا ہے ۔ڈاکٹرامین یوسف زئی نے کہا کہ بچے کی بازیابی کے لیے ایسی حکمت عملی مرتب کی گئی جس میں اس بات کو یقینی بنایا گیا کہ ملزمان کو مغوی بچے کو نقصان نہ پہنچاسکیں ۔انہوںنے کہا کہ اغوا کی وارداتوں کی بیخ کنی کے لیے ہم پرعزم ہیں اور ان وارداتوں پر جلد قابوپالیا جائے گا ۔انہوںنے کہا کہ ہماری بھرپور کوشش ہے کہ عوام کا قانون نافذکرنے والے اداروں پر اعتماد بحال ہو ۔