وزارت ماحولیاتی تبدیلی کے زیر اہتمام پائیدارترقی اور ماحولیاتی تحفظ کے بارے میں نمائش کا انعقاد

منگل اپریل 20:41

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) وزارت ماحولیاتی تبدیلی نے پائیدارترقی اور ماحولیاتی تحفظ کے بارے میں منگل کو ایک نمائش منعقد کرائی جوکہ پاک چائنا سینیٹر اسلام آباد میں بی دیئرنامی آرگنائزیشن کے اشتراک سے منعقد کی گئی۔ اس نمائش میں دیئے گئے مرکزی موضوع پر پاکستان بھر سے آئے طلباء نے 50سے زائد پراجیکٹس پیش کئے۔

اس کے علاوہ سٹالز پر ماحولیات اور پائیدار ترقی کے بارے میں کام کرنے والی مختلف تنظیموں نے بھی اپنے کام کی نمائش کی۔ نمائش کی اختتامی تقریب میں 3بہترین پراجیکٹس کا اعلان کیا گیا۔سٹیزن فاریسٹر کمپین گرین پاکستان پروگرام کے تحت گھر گھر ایک شجر کی تقسیم کیلئے رضاکارانہ طورپر کام کرنے والوں میں ایوارڈ اور اسناد تقسیم کی گئیں۔

(جاری ہے)

اس مہم کے تحت اسلامی یونیورسٹی، قائداعظم یونیورسٹی اور فاطمہ جناح یونیورسٹی کے 115 طلباء نے رضاکارانہ طور پر اپنی خدمات پیش کیں۔

اس پر مہم کے دوسرے حصہ میں اسلام آباد کے مختلف سرکاری سکولوں میں 5000 پودے تقسیم کئے گئے جو کہ پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف انوائیرنمنٹ ڈیویلپمنٹ ایکشن ریسرچ کے اشتراک سے تقسیم کئے گئے تھے۔ وفاقی وزیر برائے موسمیاتی تبدیلی سینیٹر مشاہد اللہ خان نے اختتامی تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں ان نوجوانوں کی صلاحیت اورتنوع و جدت پر مبنی آئیڈیا سے و اقعی بہت متاثر ہوا ہوں ۔

وزارت ماحولیات اور ماحولیات کیلئے کام کرنے والی تنظیموں کو ان آئیڈیاز سے استفادہ کا منصوبہ بنانا چاہئے تا کہ ہم نوجوانوں کے پیش کردہ آئیڈیاز سے موحولیاتی تبدیلی کے اثرات میں کمی لا سکیں۔ انہوں نے گھر گھر ایک شجر کے رضا کاروں کی کوششوں کو بھی سراہا جنہوں نے بڑی ذمہ داری کے ساتھ مشکل کام کو پایہٴ تکمیل تک پہنچایا۔انہوں نے کہا کہ یہ پاکستان میں آگاہی کی پہلی مہم ہے جس میں طلبا ماحول کے بارے میں آگاہی پھیلانے کیلئے 10ہزار گھروں میں گئے اور پودے تقسیم کئے جن کا ہر گھر کی تصویر کی شکل میں ریکارڈ بھی موجود ہے ۔

اس مہم میں سرکاری سکولوں کے بچوں نے ہدف پورا کیا جو کہ قابل ستائش ہے۔ اس موقع پر بی دئیر کی عہدیدار مس مدیحہ نے نمائش کے اغراض و مقاصد کو اجاگر کیا اور بتایا کہ اس ایکسپو کا مقصد طلبا اور نوجوانوں کے پائیدار ترقی اور ماحولیاتی تحفظ بارے شاندار آئیڈیاز کا قومی سطح پر اعتراف کرنا ہے اور ماحولیاتی تحفظ کے لئے کام کرنے والے نوجوانوں کا ماحول بارے کام کرنے والی تنظیموں سے رابطہ قائم کرنا ہے۔

’’ گھر گھر ایک شجر‘‘ کی مہم کی انچارج ظل ہما نے بھی بتایا کہ اس مہم کا مقصد وزارت کی طرف سے ماحولیاتی تحفظ بارے آگاہی و پیغام دینا ہے ۔جبکہ اس مہم کا دوسرا مقصد یہ تھا کہ گھروں میں درخت لگائے جائیں کیونکہ سڑکوں اور میدانوں میں لگائے گئے درختوں کی اس طرح حفاظت نہیں ہوتی جس طرح کہ گھر پر لگائے گئے درخت کی ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے مہم شروع کر دی ہے جس کو تحریک بنانا ہو گا ۔ ایکسپو میں راولپنڈی اسلام آباد کی مختلف یونیورسٹیوں کے طلباء کی بڑی، بین الاقوامی تنظیموں ، کاروباری اداروں اور میڈیا کے نمائندگان نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔