ڈاکٹر البطش کے قتل میں عالمی خفیہ اداروں کا ہاتھ ہو سکتا ہے، ملائیشیا

بدھ اپریل 10:10

کوالالمپور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) ملائیشیا کے نائب وزیراعظم اور وزیر داخلہ زاہد حمیدی نے کہا ہے کہ فلسطینی سائنسدان ڈاکٹرفادی البطش کے مجرمانہ قتل میں غیرملکی خفیہ اداروں ملوث ہو سکتے ہیں۔

(جاری ہے)

ملائیشیا کے ذرائع ابلاغ کے مطابق کوالالمپور میں میڈیا سے گفتگو میں ا انہوں نے بتایا کہ پولیس کو معلوم ہوا کہ کولالمپور یونیورسٹی کے فلسطینی پروفیسر ڈاکٹر البطش ترکی میں عالمی کانفرنس میں شرکت کے لیے جانے کی تیاری کررہے تھے کہ نامعلوم مسلح افراد نے نماز فجر کے وقت ان پر حملہ کر کے انہیں قتل کر دیا۔

ڈاکٹر البطش فلسطین دشمن ریاست کے لیے بوجھ تھے اور وہ انہیں جان سے مارنے کے درپے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ پولیس کو ملنے والے شواہد سے اشارہ ملتا ہے کہ اس مجرمانہ واقعے میں غیرملکی خفیہ اداروں کا ہاتھ ہوسکتا ہے۔ وزیر داخلہ نے نام لیے بغیر اسرائیل کی طرف اشارہ کیا اور کہا کہ فلسطین دشمن کوئی بھی ملک ایسی کارروائی کرسکتا ہے۔انہوں نے عالمی پولیس ایجنسی انٹرپول اور جنوب مشرقی ایشیائی ممالک کی پولیس سے بھی البطش کے قتل کی تحقیقات میں معاونت کی اپیل کی ہے۔