درجہ حرارت میں اضافہ کے ساتھ ہی بازاروں، ریڈی میڈ گارمنٹس مارکیٹوں خصوصاً لنڈا بازار کی رونقیں دوبالا

بدھ اپریل 13:54

درجہ حرارت میں اضافہ کے ساتھ ہی بازاروں، ریڈی میڈ گارمنٹس مارکیٹوں ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) درجہ حرارت میں اضافہ کے ساتھ ہی بازاروں، ریڈی میڈ گارمنٹس مارکیٹوں خصوصاً لنڈا بازار کی رونقیں دوبالا ہو گئی ہیں جہاں بڑی تعداد میں لان، لینن اور گرم موسم کے ملبوسات فروخت کیلئے رکھے گئے ہیں اور وہاں عوام کا بھی رش دیکھنے میں آ رہا ہے جبکہ غریب،، محنت کش، متوسط و سفید پوش طبقہ کے افراد بڑی تعداد میں لنڈ ا بازاروں کا رخ کر رہے ہیں جن میں خواتین کی کثیر تعداد بھی شامل ہے۔

بدھ کو ’’اے پی پی‘‘ کے سروے کے مطابق گرمی میں ا ضافہ کے ساتھ ہی بہت سے مقامات پر گرم موسم کے ملبوسات بازار سج گئے ہیں۔ مہنگائی نے عوام کو بری طرح متاثر کیا، کپڑوں کی قیمتیں بھی آسمانوں سے باتیں کر نے لگی ہیں۔ دکانداروں نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ کپڑوں کی قیمت میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے اور ان کی ٹرانسپورٹیشن کے اخراجات بھی زیادہ ہو گئے ہیں، اس لئے مجبوراً انہیں کپڑوں کی قیمتوں میں اضافہ کرنا پڑ رہا ہے۔

(جاری ہے)

اس موقع پر خریداری کیلئے آنے والی خواتین نے قیمتوں میں بلاجواز اضافے پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ چونکہ اکثر شعبہ جات میں قیمتوں پر متعلقہ اداروں کا کوئی کنٹرول اور چیک اینڈ بیلنس نہیں ہے، اس لئے دکاندار غریب عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں۔ اس طرح موجودہ حالات میں غریب افراد کیلئے کپڑوں کی خریداری بھی ان کی پہنچ سے دور ہوتی جا رہی ہے۔ انہوں نے حکومت سے فوری کارروائی اور قیمتوں پر کنٹرول کیلئے لائحہ عمل کا اعلان کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ عنوان :