ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس: شعیب شیخ سمیت دیگر ملزمان کی بریت کا فیصلہ کالعدم

سیشن جج اسلام آباد ویسٹ فریقین کے دوبارہ دلائل سننے کے بعد فیصلہ کریں ،ْ عدالتی حکم

بدھ اپریل 14:28

ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس: شعیب شیخ سمیت دیگر ملزمان کی بریت کا فیصلہ کالعدم
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) اسلام آباد ہائیکورٹ نے بدنام زمانہ ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس میں نامزد ملزم شعیب شیخ سمیت دیگر کی ماتحت عدالت سے بریت کا فیصلہ کالعدم قرار دیدیا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل 2 رکنی ڈویڑن بینچ نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا اور بدھ کو جسٹس اطہر من اللہ نے مختصر فیصلہ پڑھ کر سنایا۔

عدالت نے شعیب شیخ اور دیگر کی بریت سے متعلق ماتحت عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے حکم دیا کہ سیشن جج اسلام آباد ویسٹ فریقین کے دوبارہ دلائل سننے کے بعد فیصلہ کریں۔عدالت نے ملزمان کو گرفتاری سے بچنے کے لیے نئے ضمانتی مچلکے داخل کرانے کا بھی حکم دیا۔جسٹس اطہر من اللہ نے وفاق کے وکیل راجا خالد سے مکالمہ کے دوران کہا کہ آپ کے دلائل سے متفق ہو کر فیصلہ سنایا۔

(جاری ہے)

دنیا بھر میں جعلی ڈگری کا کاروبار کرنے والی کمپنی ایگزیکٹ کے کالے دھند کا انکشاف 18 مئی 2015 کو امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز نے کیا۔ایگزکٹ کا جعلی ڈگریوں کا اسکینڈل دنیا بھر میں پاکستان کیلئے بدنامی کا باعث بنا کیونکہ ایگزیکٹ جعلی ڈگریوں، پیسے چھاپنے اور لوگوں کو بلیک میل کرنے کا کاروبار دنیا بھر میں پھیلا چکی تھی۔۔چیف جسٹس پاکستان نے بھی ایگزیکٹ کے بدنام زمانہ جعلی ڈگری اسکینڈل کا از خود نوٹس لے رکھا ہے۔