اسرائیل کی شام میں روسی فضائی دفاعی نظام تباہ کرنے کی دھمکی

شام کو ایران کی کالونی نہیں بننے دیا جائے گا:اسرائیلی وزیر دفاع

بدھ اپریل 15:25

دبئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) اسرائیلی وزیر دفاع آوی گیڈور لائبرمین نے منگل کو ایک بیان میں دھمکی دی ہے کہ شام میں موجود روس کا فضائی دفاعی نظام ’S-300‘ اسرائیل کے خلاف استعمال ہوا تو اسے تباہ کر دیا جائے گا۔عبرانی اخبار ’یدیعوت احرونوت‘ کی ویب سائیٹ ’وائی نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے اسرائیلی وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ ’اہم بات یہ ہے کہ روس نے جو دفاعی نظام شام میں اسد رجیم کو دے رکھے ہیں انہیں ہمارے خلاف استعمال نہ کیا جائے۔

اگر وہ ہتھیار ہمارے خلاف استعمال ہوئے تو ہم حرکت میں آئیں گے‘۔ بر طا نو ی خبر رساں ادارے کے مطابق ایک روسی سفارت کار کا کہنا ہے کہ اسرائیلی حکام نے ماسکو سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ شامی رجیم کو ’S-300‘ جیسا فضائی دفاعی نظام فراہم نہ کرے، کیونکہ خطرہ ہے کہ اس کے ذریعے اسرائیل پر میزائل برسائے جا سکتے ہیں۔

(جاری ہے)

لائبرمین نے کہا کہ ہم شام میں اندرونی معاملات میں مداخلت نہیں کرتے مگر شام کو ایران کی کالونی نہیں بننے دیں گے۔

شام میں بھیجے گئے اسلحے کو ہمارے خلاف استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اگر ہمارے خلاف استعمال کیا گیا تو ہم اس کا جواب دیں گے۔ ہم نہیں دیکھیں گے کہ وہ ’S-300‘ ہے یا S-700 یا کوئی اور چیز ہے۔اسرائیلی وزیر دفاع نے کہا کہ انہیں توقع ہے کہ شام میں موجود روسی دفاعی نظام اسرائیل کے خلاف استعمال نہیں ہو گا کیونکہ دونوں ملکوں کے درمیان کئی سال سے کامیاب تعاون جاری ہے۔ شام میں دونوں ملکوں کے درمیان کوئی پریشان کن صورت حال پیدا نہیں ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شام میں جو دفاعی نظام ہمارے خلاف استعمال ہو گا اور ہمیں پتا چلے گا کہ شامی رجیم یا اس کے کسی معاون کے ہتھیار ہمارے خلاف استعمال ہوئے ہیں تو ہم انہیں تباہ کر دیں گے۔