حیدرآباد، مہران یونیورسٹی جامشورومیں تین روزہ " پانچویں بین الاقوامی کثیر الموضوعاتی کانفرنس کی افتتاحی تقریب

بدھ اپریل 22:12

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) مہران یونیورسٹی جامشورومیں تین روزہ " پانچویں بین الاقوامی کثیر الموضوعاتی کانفرنس " (Multi Topic Conference 2018 ) کی افتتاحی تقریب منعقد ہوئی ․ بین الاقوامی کانفرنس میں ملکی و بین الاقوامی اسکالروں نے شرکت کی جو تین روزہ کانفرنس میں اپنے تحقیقی مقالے پیش کرینگے۔

(جاری ہے)

افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مہران یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اسلم عقیلی نے کہا کہ یہ کانفرنس 2008ء سے مسلسل کرا رہے ہیں یہ اس سلسلے میں پانچویں کثیر الموضوعاتی کانفرنس ہے ․ عالمی کانفرنس کے ذریع ہم بین الاقوامی تدریسی برادری کا حصہ ہوتے ہیں ․ ہمیں اس کے ساتھ مشترکہ تحقیق میں کافی مدد ملے گی․ انہوں نے کہا کہ تحقیق سے ہم سماج کو نت نئے حل نکال کر دے سکتے ہیں جیسا کہ آج کی کانفرنس کا موضوع ""ٹیکنالوجی اور آنے والے نسل " ہے آج ہمیں ٹیکنالوجی میں جو چیلنجز درپیش ہیں اس کانفرنس کے ذریعے انہیں سمجھنے میں مدد ملے گی ․ کانفرنس کے چیف آرگنائزر پروفیسر ڈاکٹر بھوانی شنکر چودھری نے کانفرنس کے مقاصد اور تفصیلات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ دنیا کے مختلف ممالک میں سی200تحقیقی مقالوں میں سے 34مقالے سخت چھان بین کے بعد یہ مقالے منظور کئے گئے جو جمع ہونے والے مقالوں کامشکل سے 20 فیصد ہے ․ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ کتنی سخت چھان بین کے بعد یہ مقالے منظور کئے گئے جو اس عالمی کانفرنس میں پیش کئے جائینگے ․ افتتاحی تقریب میں یونیورسٹی آف ٹوکیو جاپان کے ڈاکٹر ہیرو یو کی ساٹونے انٹرنیٹ کی سروس اسٹرکچر پر پرزنٹیشن دی ․ جبکہ دیگر ماہرین نے بھی تحقیقی مقالے پیش کئی․ مطلوبہ بین الاقوامی کانفرنس کی اختتامی تقریب بروز جمع کو ہوگی ․ پانچویں کثیر الموضوعاتی کانفرنس میں فیکلٹی ڈینز، مختلف شعبوں کے چیئرمینز ، استاتذہ، نوجوان اسکالروں سمیت ملکی و بین الاقوامی ماہرین نے شرکت کی ․ افتتاحی تقریب کے آخر میں ڈاکٹر فیصل کریم شیخ نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔