ووٹ کی عزت کی بات کرنے والوں کا جمہوریت سے کوئی لینا دینا نہیں ہے،(ن) لیگ کا پورا بجٹ پیش کرنا قبل از انتخابات دھاندلی ہے، بلاول بھٹو

عدلیہ سے محاذ آرائی ملک اور جمہوریت کے مفاد میں نہیں، لوٹا ازم جمہوریت کیلئے ٹھیک نہیں،پیپلز پارٹی سے جانیوالے لوگوں کو دوسری جماعتوں میں وہ عزت نہیں ملی جو انہیں پیپلز پارٹی نے دی ہے، ضیاء کی باقیات سے لڑنے کیلئے مشرف کی باقیات سے اتحاد کا کوئی جواز نہیں ہے، میڈیا سے گفتگو

بدھ اپریل 22:22

ووٹ کی عزت کی بات کرنے والوں کا جمہوریت سے کوئی لینا دینا نہیں ہے،(ن) ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ووٹ کی عزت کی بات بے معنی تکرار کے سوا کچھ نہیں ہے،،ووٹ کی عزت کی بات کرنے والوں کا جمہوریت سے کوئی لینا دینا نہیں ہے، عدلیہ سے محاذ آرائی ملک اور جمہوریت کے مفاد میں نہیں،(ن) لیگ کا پورا بجٹ پیش کرنا قبل از انتخابات دھاندلی ہے، لوٹا ازم جمہوریت کیلئے ٹھیک نہیں،،پیپلز پارٹی سے جانیوالے لوگوں کو دوسری جماعتوں میں وہ عزت نہیں ملی جو انہیں پیپلز پارٹی نے دی ہے، ضیاء کی باقیات سے لڑنے کیلئے مشرف کی باقیات سے اتحاد کا کوئی جواز نہیں ہے، اقتدار میں آ کر نیب قانون کو مزید مضبوط بنائینگے۔

بدھ کو اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ووٹ کی عزت کی بات بے معنی تکرار کے سوا کچھ نہیں ہے، ووٹ کی عزت کی بات کرنے والوں کا جمہوریت سے کوئی لینا دینا نہیں ہے ۔

(جاری ہے)

مسلم لیگ (ن) کو پورے مالی سال کا بجٹ پیش کرنے کا کوئی حق نہیں، ان کا حق5بجٹ پیش کرنا تھا ،یہ قبل از انتخاب دھاندلی اور نئی پارلیمنٹ کی حق تلفی ہوگی ۔

انہوں نے کہا کہ نیا بجٹ الیکشن کے بعد بننے والی حکومت کا حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت صرف 3 یا 6 مہینے کا بجٹ پیش کرسکتی ہے ،پورا بجٹ پیش کرنا آئندہ حکومت کا کام ہے۔انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی بھی پورے سال کا بجٹ پیش نہیں کریگی۔انہوں نے کہا کہ نگران وزیر اعظم کیلئے مشاورت کر رہے ہیں، معاملے پر جلد اچھے نتیجے پر پہنچیں گے۔انہوں نے کہا کہ تین وزرائے اعلیٰ نے کل ایک اجلاس سے واک آؤٹ کیا تھا جبکہ چوتھا بھی اجلاس میں نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی سے جانیوالے لوگوں کو دوسری جماعتوں میں وہ عزت نہیں ملی جو انہیں پیپلز پارٹی نے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جانے والے کسی مخصوص شخص پر بات نہیں کرنا چاہتا تاہم لوٹا ازم جمہوریت کیلئے ٹھیک نہیں ہے،نئی نسل نے اسے مسترد کردیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی انتخابی منشور پر کام کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیب قانون کے خاتمے کا یہ وقت بالکل غلط ہے کیونکہ موجودہ پارلیمنٹ کی مدت ختم ہو رہی ہے تاہم پیپلز پارٹی خود حکومت میں آ کر نیب قانون میں ترمیم کرے گی اور اسے مزید مضبوط بنائیگی۔

انہوں نے کہاکہ اداروں کے درمیان تصادم نہیں ہونا چاہئے ،مسلم لیگ (ن )کی تصادم کی سیاست ملک کے مفاد میں نہیں ، انہیں پیچھے ہٹنا چاہئے، مجھے نہیں معلوم وہ ایسا کیوں کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن)کی سیاست بہت گندی ہے وہ عزت دار آدمی کیخلاف الزام لگا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عدلیہ سے محاذ آرائی ملک اور جمہوریت کے مفاد میں نہیں۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور عمران خان ایک جیسی سیاست کر رہے ہیں ، دونوں کے ساتھ مل کر کام نہیں کرنا چاہتا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں کیخلاف الیکشن لڑوں گا۔انہوں نے کہا کہ ہر فرعون کیخلاف لڑنے کیلئے تیار ہوں ، ضیاء کی باقیات سے لڑنے کیلئے مشرف کی باقیات سے اتحاد کا کوئی جواز نہیں ہے۔