سعودی عرب میں فوجی تنصیبات پر حملے کا منصوبہ بروقت ناکام بنا دیا گیا

جمعرات اپریل 11:41

سعودی عرب میں فوجی تنصیبات پر حملے کا منصوبہ بروقت ناکام بنا دیا گیا
ریاض ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) سعودی عرب میں قائم فوجداری کی خصوصی عدالت نے مملکت میں فوجی تنصیبات پر دہشتگردانہ حملے کی منصوبہ بندی میں حصہ لینے والے فوجی پر مقدمے کی سماعت شروع کردی۔ سعودی اخبارکے مطابق مقامی شہری پر عائد کی جانے والی فرد جرم میں کہا گیا ہے کہ وہ مملکت میں فوجی تنصیبات کے خلاف دہشتگرد حملے کی منصوبہ بندی اور داعش تنظیم کے ارکان سے رابطہ اور انہیں پناہ دینے کے جرائم کا مرتکب پایا گیا ہے۔

(جاری ہے)

اس پر یہ الزام ہے کہ اس نے مملکت کے اندر دہشتگرد حملوں کی جمایت کی اور داعش نیز القاعدہ تنظیموں کی تائید کی جنہیں سعودی عرب دہشتگرد تنظیم قرار دیئے ہوئے ہے۔ تیسرا الزام یہ عائد کیا گیا کہ وہ یمن اور وہاں سے شام جاکر شورش زدہ علاقوں میں القاعدہ کے ساتھ مل کر قتل میں حصہ لینے کی منصوبہ بندی کررہا تھا۔ چوتھا الزام یہ ہے کہ اس نے فوج سے منسلک ہوتے وقت جو قسم کھائی تھی اسے توڑ دیا اور امت سے غداری کی۔ پانچواں الزام یہ ہے کہ اس نے ایک مقدمے میں رہائی کے وقت جو اقرار نامہ پیش کیا تھا اس کا بھی پاس نہیں کیا۔ پبلک پراسیکیوٹر نے مندرجہ بالا الزامات کے ثبوت مہیا کرنے پر اسے مجرم قرار دینے اور نشان عبرت بنانے کیلئے موت کی سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔