ایران ہمیں مشرق وسطیٰ میں جنگ کی طرف نہ لے جائے،فرانسیسی صدر

اتحادی ممالک کے درمیان تجارتی جنگ خطرناک،امریکا،فرانس دونوں دہشتگردی سے متاثرہوئے،کانگریس سے خطاب

جمعرات اپریل 12:18

پیرس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) فرانس کے صدر عمانویل ماکروں نے امریکی کانگریس سے خطاب میں واضح کیا ہے کہ عالمی طاقتوں اور ایران کے درمیان تہران کے متنازع جوہری پروگرام پر طے پائے معاہدے کو ختم نہیں کیا جاسکتا۔ ایران کو جوہری ہتھیاروں کے حصول سے روکنا ناگزیر ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق فرانسیسی صدر نے کانگریس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ایران کی پالیسی ہمیں مشرق وسطیٰ میں جنگ کی طرف نہ لے جائے۔

(جاری ہے)

انہوں نے خبردار کیا کہ اتحادی ممالک کے درمیان تجارتی جنگ خطرناک ہے۔صدر ماکروں نے کہا کہ اتحادی ملکوں کے درمیان تجارتی بنیادوں پر کشمکش مناسب نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پیرس میں ہونے والے عالمی ماحولیاتی معاہدے کا کوئی متبادل نہیں۔فرانسیسی صدر کے خطاب کے دوران کانگریس کیارکان تین منٹ تک تالیاں بجا کر ان کا خیر مقدم کرتے رہے۔ صدر عمانویل نے کہا کہ فرانس اور امریکا کے تعلقات کی تاریخ بہت گہری ہے اور ہمارے رابطے کبھی بھی متاثر نہیں ہوئے۔انہوں نے کہا کہ حالیہ عرصے کے دوران امریکا اور فرانس دونوں دہشت گردی سے متاثر ہوئے ہیں۔

متعلقہ عنوان :