البطش کے قتل کے حوالے سے ملائیشیا نے کوئی رابطہ نہیں کیا،فلسطینی سفارتخانہ

مقتول فلسطینی سائنسدان کے بھائی جسد خاکی لے کر کولالمپور سے روانہ،تحقیق کے نتائج کے منتظر ہیں،بیان

جمعرات اپریل 12:24

کوالالمپور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) ملائیشیا میں قائم فلسطینی سفارت خانے نے کہاہے کہ 21 اپریل کو کولالمپور میں نماز فجر کے وقت نامعلوم افراد کے حملے میں مارے جانے والے فلسطینی نوجوان پروفیسر ڈاکٹر فادی البطش کی میت تدفین کے لیے اس کے آبائی علاقے غزہ روانہ کرنے کی تیاری مکمل کرلی گئی ہے۔عرب ٹی وی سے جاری ایک بیان میں کہاگیاکہ مقتول ڈاکٹر فادی البطش کا جسد خاکی سیلانگ اسپتال سے مسجد ایدمان منتقل کیا گیاہے۔

جہاں نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد کولالمپور کے بین الاقوامی ہوائی اڈے سے مصر کے دارالحکومت قاہرہ اور وہاں سے غزہ کی پٹی منتقل کیا جائے گا۔۔ڈاکٹر فادی البطش کے بھائی رامی البطش نے کہا کہ ہمیں فلسطینی سفارت خانے کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ مقتول فلسطینی سائنسدان کے جسد خاکی کو فلسطین منتقل کرنے کی اجازت حاصل کرلی گئی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے امید ظاہر کی کہ ان کے بھائی کا جسد خاکی بہ حفاظت اور کسی رکاوٹ کے بغیر ملائیشیا سے غزہ منتقل کیا جائے گا۔

جرمنی سے کولالمپور پہنچنے والے ڈاکٹر رامی البطش نے بتایا کہ ان کے بھائی کے قتل کے حوالے سے ہونے والی تحقیقات کے باریمیں ملائیشیا کے حکام نے ان سے کوئی بات نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم ملائیشیا کے تحقیقاتی اداروں کی طرف سے کی جانے والی تحقیق کے نتائج کے منتظر ہیں۔