شام کے لئے ڈونر کانفرنس میں 4.4 بلین ڈالر کی امداد کا اعلان

جمعرات اپریل 13:00

برسلز۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) شام کے جنگ زدہ علاقوں کی تعمیر نو اور بحالی کے لئے اقوام متحدہ اور یورپین یونین ہیومنٹیرین کانفرنس کے دوران 4.4 بلین ڈالر کی امداد کا اعلان کیا گیا ہے ۔ برسلز میں منعقدہ ڈونرز کانفرنس میں منتظمین نے رواں سال کے لئے 6 بلین ڈالر جمع کرنے کی توقع ظاہر کی تھی۔ گزشتہ روز ہونے والی کانفرنس کے بعد اقوام متحدہ کے ریلیف ادارے کے سربراہ مارک لوکاک نے بتایا کہ شرکاء کی جانب سے تقریباً ساڑھی4.4 بلین ڈالر کے وعدہ سامنے آئے ہیں۔

جرمن حکومت نے اس کانفرنس میں ایک بلین یورو دینے کا اعلان کیا۔ یورپی یونین کے مطابق وہ سالانہ امداد کے حجم کو برقرار رکھنے کے حق میں ہے۔ یونین کی جانب سے 560 ملین یورو کی امداد دی جاتی ہے۔ برطانیہ نے 280 ملین ڈالر دینے کا عندیہ دیا ہے۔

(جاری ہے)

کانفرنس میں 85 ممالک اور تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی ۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ شام میں سیاسی و جمہوری انتقال اقتدار کے لئی2012 کے جنیوا معاہدے اور شام میں قیام امن کے لئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی منظور کردہ قرارداد پر عمل درآمد وقت کی اہم ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ وہ شام میں عوامی امنگوں کے مطابق حقیقی اور پائیدار سیاسی حل کے لئے اقوام متحدہ کے رکن ممالک سے مسلسل رابطے رکھے ہوئے ہیں۔انھوں نے کانفرنس کو بتایا کہ شام میں 13 ملین شہریوں کو فوری بنیادوں پر امداد کی ضرورت ہے جبکہ 5.6 ملین شامی شام کے ہمسایہ ممالک میں پناہ لینے پر مجبور ہو چکے ہیں۔یورپین کمشنر کرسٹوس سٹائلینیڈز نے اس موقع پر کہا کہ شام کے لئے ملنے والی امداد کی ایک ایک پائی کو انتہائی شفافیت کے ساتھ برقت شام میں لگانا ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔