امریکہ میں پاکستانی سفارتخانہ کے قریب ایرانی مفادات مرکز میں مسلح شخص گھس گیا

ایران مخالف نعرے بلند،امریکی خفیہ سروس نے مسلح شخص کو حراست میں لیکر مقدمہ درج کر لیا

جمعرات اپریل 15:36

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) امریکی خفیہ سروس حکام نے کہاہے کہ امریکہ میں پاکستانی سفارت خانے میں قائم ایرانی مفادات مرکز سے ایک مسلح شخص کو حراست میں لیا گیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایک بیان میں خفیہ سروس حکام نے بتایا کہ ایرانی مفادات مرکز میں فائرنگ کی اطلاع ملتے ہی خفیہ ایجنٹس نے فوری کارروائی کی جس دوران تصدیق ہوئی کہ مسلح حملہ آور نے کوئی گولی نہیں چلائی۔

تاہم اس کارروائی میں ایک نامعلوم مسلح شخص کو حراست میں لے لیا گیا، اس کے خلاف حملے کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔حکام نے ابھی تک گرفتار کئے جانے والے شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی۔۔ایران کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے اپنی ویب سائٹ پر مخصتر دورانئے کا ویڈیو کلپ پوسٹ کیا جس میں دکھائے جانے مناظر سے لگتا ہے کہ وہ سیکرٹ سروس کے مسلح افراد کے ہیں جو زمین پرگرائے گئے مشتبہ شخص پر قابو پانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

(جاری ہے)

مسلح شخص ایران کے خلاف نعرہ بازی کر رہا تھا، تاہم اس کی مزید تفصیل نہیں بتائی گئی۔ جس عمارت میں یہ واقعہ پیش آیا وہاں بھارت اور میکسیکو سمیت متعدد ملکوں کے قونصل خانے موجود ہیں۔یاد رہے ایران میں 1979 کو شاہ کا تختہ الٹنے کے بعد رونما ہونے والے انقلاب کے بعد امریکا نے تہران سے سفارتی تعلقات منقطع کر لئے تھے۔ ایسے ملک جن سے ایران کے سفارتی تعلقات نہیں وہاں بالواسطہ سفارتکاری کا سہارا لیتا ہے۔ واشنگٹن میں پاکستانی سفارتخانہ بھی ایران اور امریکا کے درمیان ایسی ہی بالواسطہ سفارتکاری کی سہولت فراہم کرتا ہے۔