نقیب قتل کیس،جے آئی ٹی نے رائوانوار کو ماورائے عدالت قتل کا ذمہ دار قرار دے دیا

را ئوانوار اور ان کی ٹیم نے شواہد ضائع کیے، ماورائے عدالت قتل چھپانے کے لئے میڈیا پر جھوٹ بولا، رپورٹ

جمعرات اپریل 15:37

نقیب قتل کیس،جے آئی ٹی نے رائوانوار کو ماورائے عدالت قتل کا ذمہ دار ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) نقیب قتل کی تفتیش کرنے والی مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی نے رائو انوار کو نقیب اللہ کے ماورائے عدالت قتل کا ذمہ دار ٹھہرا دیا۔۔سندھ پولیس کے ایڈیشنل آئی جی آفتاب پٹھان کی سربراہی میں قائم کی جانے والی جے آئی ٹی نے اپنی رپورٹ تیار کر لی ہے، جس میں رائو انوار کو واقعے کا ذمے دار قرار دیا گیا ہے۔جے آئی ٹی رپورٹ کے مطابق نقیب اللہ محسود کا کوئی مجرمانہ ریکارڈ نہیں ملا، قتل ہونے والے دیگر افراد صابراوراسحاق کا بھی کرمنل ریکارڈ نہیں ہے۔

(جاری ہے)

رپورٹ میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ رائو انوار اور ان کی ٹیم نے شواہد ضائع کیے، ماورائے عدالت قتل چھپانے کے لئے میڈیا پر جھوٹ بولا گیا۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جیوفینسنگ اور دیگر شہادتوں سے رائو انوار کی واقعے کے وقت موجودگی ثابت ہوتی ہے، رائو انوار نے تفتیش کے دوران ٹال مٹول سے کام لیا۔رپورٹ کے مطابق ڈی این اے سے مزید پتا چلا ہے کہ دومقتولین کو الگ کمرے میں قتل کیا گیا، چاروں افراد کو قتل کرنے کے بعد لاشیں ایک جگہ دکھائی گئیں۔جے آئی ٹی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ رائو انوار نے نقیب اللہ ود یگر کو ماورائے عدالت قتل کیا، رائو انوار اور دیگر پولیس افسران کا عمل دہشت گردی ہے۔