کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ پر عمل درآمد کیلئے ٹاسک فورس کا قیام، کمشنر کراچی کی زیر صدارت پہلا اجلاس

جمعرات اپریل 19:45

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) کمشنر کراچی اعجاز احمد خان کی زیر صدارت ان کے دفتر میں کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ پر عملدرآمد کیلئے حکومت سندھ کی قائم کردہ ٹاسک فورس کا اجلاس منعقد ہوا جس میں منصوبہ پر عملدرآمد میں حائل تجاوزات ہٹانے کیلئے ایکشن پلان بنانے کا فیصلہ کیا گیا۔ جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق کمشنر نے متعلقہ ڈپٹی کمشنرز سے کہا کہ وہ ریلوے ٹریک پر قائم تجاوزات کا جائزہ لیں اور تجاوزات کے خاتمہ کیلئے ایکشن پلان تیار کریں۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سرکلر ریلوے کے ٹریک پر موجود تمام غیر قانونی تجاوزات کو ہٹایا جائے گا۔ فیصلہ کیا گیا کہ ریلوے ٹریک پر قابض ان تمام دکانداروں اور کاروبار کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی اور غیر قانونی طور پر قابض دکانداروں کو معاوضہ نہیں دیا جائے گا۔

(جاری ہے)

تاہم مستحق متاثرین کی بحالی کی مدد کرنے پر غور کیا گیا۔

کمشنر نے متعلقہ افسران کو ہدایت کی کہ وہ تجاوزات کے خاتمے اور منصوبے پر عملدرآمد کیلئے مربوط کوششیں کریں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کراچی میں ٹرانسپورٹ سہولتوں کو بہتر بنانے کیلئے ترجیحی اقدامات کر رہی ہے، ماس ٹرانزٹ اور کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ شہر کی اہم ضرورت ہے، حکومت کراچی سرکلر ریلوے منصوبے کو تیز رفتار ی کے ساتھ مکمل کرنا چاہتی ہے، منصوبہ کو جلد مکمل کرنے اور ترجیحی اقدامات کے لئے اوور سائٹ کمیٹی اور ٹاسک فورس قائم کی گئیں تاکہ اعلی سطح پر تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر منصوبہ کو جلد از جلد مکمل کیا جا سکے۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ٹاسک فورس کے گاہے بہ گاہے اجلاس ہوں گے اور ہر ہفتہ ٹاسک فورس کی کارروائی اور کارکردگی رپورٹ اوور سائٹ کمیٹی کو پیش کی جائے گی۔ کمشنر کراچی کی سربراہی میں قائم ٹاسک فورس کے ارکان میں ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ پاکستان ریلویز، تمام ڈپٹی کمشنرز، ڈائریکٹر جنرل کے ڈی اے، ڈی آئی جی کراچی پولیس،، میونسپل کمشنر بلدیہ عظمیٰ کراچی،، مینجنگ ڈائریکٹر، کراچی اربن ٹرانسپورٹ کارپوریشن، تمام ضلعی بلدیات کے میونسپل کمشنرز، ٹاسک فورس کے ارکان ہیں جبکہ ڈائریکٹر جنرل ماس ٹرانزٹ اتھارٹی ٹاسک فورس کے رکن اور سیکریٹری ہیں۔

اجلاس میں ٹاسک فورس کے ارکان اور دیگر نے شرکت کی۔ کمشنر نے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے منصوبے پر عملدرآمد سے شہر میں ٹرانسپورٹ کی سہولتیں بہتر بنانے کی حکومت کی کوششوں میں مدد ملے گی۔