دباؤ کے تحت کام کرنے پراعتماد سے کام لیں اور اسے اپنے لئے مسلہ نہ بنائیں،تھامس منٹگمری

جمعرات اپریل 22:02

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) پاکستان میں امریکی سفارتخانہ اسلام آباد کے کلچرل اتاشی تھامس منٹگمری نے طلبہ پر زور دیا ہے کہ وہ دباو کی کیفیت میں مایوسی کا شکار ہونے کے بجائے اس بہتر طور پر نمٹنے کی صلاحیت پیدا کریں تاکہ وہ درپیش مسائل پر کامیابی کے ساتھ قابو پاسکیں،دباو کا سامنا کرتے ہوئے کام کرنے کا مسلہ دنیا بھر میں ہر جگہ موجود ہوتا ہے اور اس نکلنے کا بہتر طریقہ یہی ہے آپ اس سے اچھی طرح نمٹنے کی کوشش کریں اور اسے اپنے لئے ایک مستقل مسلہ نہ بننے دیں۔

یہ بات انہوں نے گزشتہ شام محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی (ماجو) کے طلبہ کی پرسنالٹی ڈیویلپمنٹ سوسائیٹی کے زیر اہتمام اسٹریس مینجمنٹ (دباو سے نکلنی) کے موضوع پر ہونے والے ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

(جاری ہے)

سیمینار سے ماجو کی بزنس ایڈمنسٹریشن اینڈ سوشل سائینسز کے ایسو سی ایٹ ڈین ڈاکٹر شجاعت مبارک، پرسنالٹی ڈیویلپمنٹ سو سائیٹی کے سربراہ ندیم احمد اور معاون سربراہ جہانزیب خان نے بھی خطاب کیا۔

امریکی سفارتکار تھامس منٹگمری نے طلبہ سے کہا کہ جب آپ دباو کی کیفیت کا سامنا کریں تو یہ دیکھیں کے آپکے کے نزدیک فوری یا اہم کام کیا ہے ، کیا کام فوری نہیں کرنا ہے یا کیا کام ابھی اہم نہیں ہے انہوں نے کہا کہ دباو کی صورتحال کا سامنا کرتے وقت اگر آپ کسی کام کو فوری طور پرکرنے کو ترجیح دیں گے اور اہم کام کو ثانوی حیثیت دیںگے تو یہ بات آپ کے لئے نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہے ، اس کے لئے ضروری ہے کہ آپ اہم کام کیا ہے پہلے اسے انجام دیں تاکہ آپ دباو کی کیفیت سے نکل سکیں۔

انہوں نے کہا کہ دباو کی کیفیت کو منفی پہلو کے طور پر نہ لیا جائے اس صورتحال کو مثبت لیتے ہوئے اپنی صلا حیتوں کو بہتر طور پر استعمال کرنے کی عادت ڈالی جاسکتی ہے۔انہوں نے ایک سابق امریکی صدر آئزن ہاور کا ایک قول پیش کیا جسمیں انہوں نے کہا تھاکہ آپکے لئے کیا اہم کام ہے شاذ و ناذر ہی فوری اہمیت کا حامل ہوتا ہے اور آپ کے لئے فوری طور پر کیا کام ضروری ہے آپ کے لئے کم اہم ہوتا ہے۔

قبل ازیں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے پرسنالٹی ڈیویلپمنٹ سو سائیٹی کے سربراہ ندیم احمد نے طلبہ سے کہا کہ دباو کی کیفیت میں کام کرنے سے آپ کے اعتماد میں اضافہ ہوتا ہے اور آپ بھر پور توانائی کے ساتھ اپنے کام انجام دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جب لوگ کسی دباو کا سامنا کرتے ہیں تو یہ صورتحال انکے لئے بیداری کی ایک کال ہوتی ہے جس میں آپ کو ہشیار کیا جاتا ہت کہ آگے آئیں اور کچھ بہتر کرکے دکھائیں۔

طلبہ سو سائیٹی کے معاون سربراہ جہانزیب خان نے طلبہ پر زور دیا کہ وہ ہمیشہ سرگرم عمل رہیں اور مستقبل پر گہری نظر رکھیں تاکہ وہ آئیندہ پیش آنے والے مسائل کے حل کے لئے اپنے آپ کو تیار رکھیں۔بعد ازاں سیمینار کے اختتام پر معزز مہمان کو ماجو کی یادگاری شیلڈ پیش کی گئی اور منتظمین کو سرٹیفیکیٹ تقسیم کئے گئے۔