کلامِ اقبال کے فروغ کے لیے جدید انفارمیشن ٹیکنالوجی کے بھرپور استعمال کا فیصلہ کیا گیا ہے،

علامہ اقبال کا تمام اٴْردٴْو کلام اب انٹرنیٹ پر دستیاب ہے اور اس کی موبائل ایپلیکیشن کی مدد سے یہ کلام سمارٹ فونزپر آف لائن بھی پڑھا جاسکے گا وزیر اعظم کے مشیر برائے قومی تاریخ و ادبی ورثہ عرفان صدیقی کی علامہ اقبال قومی کانفرنس کے اختتام پر خصوصی گفتگو

جمعرات اپریل 22:06

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) وزیر اعظم کے مشیر برائے قومی تاریخ و ادبی ورثہ عرفان صدیقی نے کہا ہے کہ کلامِ اقبال کے فروغ کے لیے جدید انفارمیشن ٹیکنالوجی کو بھرپور طریقے سے استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ لاہور میں منعقدہ دو روزہ علامہ اقبال قومی کانفرنس کے اختتام کے بعد خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال کا تمام اٴْردٴْو کلام اب انٹرنیٹ پر دستیاب ہے اور اس کی موبائل ایپلیکیشن کی مدد سے یہ کلام سمارٹ فونزپر آف لائن بھی پڑھا جاسکے گا۔

علامہ اقبال کی چار اٴْردٴْو شعری تصانیف بانگِ درا، بالِ جبریل، ضرب کلیم اور ارمغانِ حجاز میں شامل 630سے زائد اشعارکا مستند ذخیرہ اب انٹرنیٹ پر دستیاب ہو گیا ہے۔۔عرفان صدیقی نے بتایا کہ یہ نہایت منفرد ایپلیکیشن ہے جس میں کسی بھی شعر کا پہلا لفظ یا آخری لفظ یا درمیان کا کوئی لفظ سرچ پر دینے کے بعد مطلوبہ اشعار کی پوری فہرست سامنے آجائے گی۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ہر شعر کے ساتھ انگریزی ترجمہ بھی دیا گیا ہے جو اقبال اکیڈمی کی تیار کردہ ’’ایپ‘‘کی نمایاں خصوصیت ہے۔ اس کے علاوہ علامہ اقبال کی مختلف نظموں اور غزلوں پر تیار کی گئی ویڈیوزبھی دیکھی جا سکیں گی۔ کوئی بھی شعر ، غزل یا نظم آسانی کے ساتھ ای میل اور سوشل میڈیا کے ذریعے دوسرے افراد کو بھیجنے کی سہولت بھی دی گئی ہے۔ ایک سوال کے جواب میں عرفان صدیقی نے بتایا کہ اگرچہ کلامِ اقبال پہلے بھی انٹر نیٹ پر دستیاب ہے لیکن اقبال اکیڈمی کی ایپلیکیشن کے ذریعے علامہ کے کلام کادرست اور مستند متن فراہم کر دیا گیا ہے۔

عرفان صدیقی نے بتایا کہ یہ ایپلیکیشن اینڈ رائڈ سسٹم پر فراہم کر دی گئی ہے جبکہ 2ماہ کے اندر اندر یہ آئی فون سسٹم پر بھی دستیاب ہوگی۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ علامہ اقبال کے تمام فارسی کلام کے مستند نسخوں کی ایپلیکیشن تیار کرنے کا منصوبہ بھی زیر تکمیل ہے۔ اٴْردٴْو ڈکشنری بورڈ کی تیار کردہ بائیس جلدوں پر مشتمل اٴْردٴْو ڈکشنری کے 2لاکھ 64ہزار سے زائد الفاظ پہلے ہی انٹرنیٹ پر فراہم کئے جا چکے ہیں۔