پیپلز پارٹی نے تحریک انصاف کی وکٹیں گرا دیں ،خیبر پی سے تین اراکین اسمبلی کا آصف زرداری سے ملاقات کر کے شمولیت کا اعلان

پیپلز پارٹی کو متحرک کرنے کیلئے بھرپور کردار ادا کریں ،عام انتخابات میں پیپلز پارٹی بھرپو رکامیابی حاصل کرے گی‘ سابق صدر کی گفتگو فائونڈر ممبر تھے ،پی ٹی آئی کو اب نظریے کی نہیں الیکٹیبل کی ضرورت ہے،منی اور الیکٹیبیلٹی فیکٹر چلنے لگا ہے‘زاہد درانی ہمارے اور بھی بہت سے ساتھی پیپلز پارٹی میں آنا چاہتے ہیں،ہمارے خلاف جو ایکشن لیا اب اسکی کوئی اہمیت نہیں‘عبید اللہ مایار بنا ء تحقیقات کے الزامات لگائے گئے،پی ٹی آئی کے بہت سے اراکین صوبائی اسمبلی نالاں ہیں ‘ نگینہ خان عمران خان خیبر پختوانخواہ میں ناکام ہوچکے ،آنیوالے دنوں میں مزید افراد پی ٹی آئی چھوڑ کر ہمارے ساتھ شامل ہونگے ‘ صدر پی پی خیبر پی کے

جمعرات اپریل 22:20

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) تحریک انصاف کے خیبر پختوانخواہ سے اراکین اسمبلی زاہد درانی ،عبید اللہ مایار اورنگینہ خان نے پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کر دیا ۔ پی ٹی آئی کو خیر باد کہنے والوں نے سابق صدر مملکت و پیپلز پارٹی پارلیمنٹرینز کے سربراہ آصف علی زرداری سے بلاول ہائوس لاہور میں ملاقات کر کے باضابطہ شمولیت کا اعلان کیا ۔

آصف علی زرداری نے نئے شامل ہونے والوں کو خو ش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ خیبر پختوانخواہ میں پیپلز پارٹی مزید مضبوط ہو گی ۔ اس موقع پر آصف علی زرداری کا کہنا تھاکہ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ عوام کی امنگوں کی سیاست کی ہے اور انشا اللہ آئندہ بھی اس پر کاربند رہیں گے۔ پیپلز پارٹی کو متحرک کرنے کیلئے بھرپور کردار ادا کریں اور انشااللہ آئندہ عام انتخابات میں پیپلز پارٹی بھرپو رکامیابی حاصل کرے گی ۔

(جاری ہے)

شمولیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے زاہد درانی نے کہا کہ ہم پی ٹی آئی کے فائونڈر ممبر تھے او رجدوجہد کے ذریعے پارٹی کو مقام پر پہنچایا ۔۔پی ٹی آئی کو اب نظریے کی نہیں الیکٹیبل کی ضرورت ہے۔ہم پر جوالزامات لگائے گئے ہم نے ان کی وضاحت کی لیکن پھر بھی کمیٹی کا کوئی رکن ہم سے ملنے نہیں آیا ۔ انہوںنے کہا کہ دیگر جماعتوں کے لوگ رابطے میں تھے لیکن پیپلز پارٹی میں شمولیت کا فیصلہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم پہلے سے زیر اعتاب تھے ،ہمیں دشمنی کی بھینٹ چڑھا دیا گیا۔ انہوںنے کہا کہ تحریک انصاف میں دیگر جماعتوں سے لوٹوں کو شامل کیا گیا،،پی ٹی آئی میں اب منی فیکٹرز اور الیکٹیبیلٹی فیکٹر چلنے لگا ہے۔انہوںنے کہا کہخیبر پختوانخواہ میں تھوڑی مس کیلکلیشن ہوئی ہے،ضروری نہیں کہ لوگ پیسے پر بکے ہوں ، پسند نا پسند کا عنصر بھی تو ہو سکتا ہے۔

عبید اللہ مایار نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختوانخواہ میں جو حالات ہیں وہ سب کے سامنے ہیں۔ہمارے اور بھی بہت سے ساتھی پیپلز پارٹی میں آنا چاہتے ہیں۔ہم پیپلز پارٹی میںبطور ورکر کام کرنے کا خواہشمند ہیں۔انہوںنے کہا کہ ہمیں جو شو کاز نوٹس جاری کیا گیا ہے ہم اسے مسترد کرتے ہیں۔ہمارے خلاف پی ٹی آئی نے جو ایکشن لیا اب اس کی کوئی اہمیت نہیں۔

خاتون رکن اسمبلی نگینہ خان نے کہا کہ ہم پر بنا ء تحقیقات کے الزامات لگائے گئے۔۔پی ٹی آئی نے جو نوٹس جاری کئے ہیں اس میں کچھ واضح نہیں لکھا۔۔پی ٹی آئی کے بہت سے اراکین صوبائی اسمبلی نالاں ہیں ۔ مختلف جماعتوں سے سب کو پیشکش ہیں ،ہم پیپلز پارٹی کے ساتھ ہیں اور ان کے ساتھ کام کریں گے۔۔پیپلز پارٹی خیبر پختوانخواہ کے صدر ہمایوں خان نے کہا کہ آنے والے دنوں میں مزید افراد پی ٹی آئی چھوڑ کر پیپلز پارٹی میں شامل ہوں گے۔۔عمران خان خیبر پختوانخواہ میں ناکام ہوچکے ہیں، پشاور کا حال دیکھ لیں، لگتا ہے خدانخواستہ دشمن نے اس پر حملہ کیا ہے۔