بلوچستان میں دہشتگردی کے واقعات میںاضافہ تشویشناک ہے،عوامی نیشنل پارٹی

عوامی مینڈیٹ پر شب خون مارکر اقتدار تک رسائی حاصل کرنے والوں نے عوام کو مایوسی سے سوا کچھ نہیں دیا، منظور بلوچ

جمعرات اپریل 22:21

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنمائوں منظور بلوچ، موسیٰ بلوچ نے کہا ہے کہ بلوچستان میں دہشتگردی کے واقعات میںاضافہ تشویشناک ہے۔ عوامی مینڈیٹ پر شب خون مارکر اقتدار تک رسائی حاصل کرنے والوں نے عوام کو مایوسی سے سوا کچھ نہیں دیا۔عام انتخابات میں بلوچستان کے عوام کا مقابلہ بلوچ دشمن اقدامات ، ناروا سلوک اور ناانصافیوں میں اضافہ کا سبب بننے والے نام نہاد عوامی نمائندوں سے ہے۔

پارٹی بلوچستان کے عوام کی حقوق کے جدوجہد سے ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹے گی۔ ان خیالات کا اظہار بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی لیبر سیکرٹری منظور بلوچ، مرکزی ہیومن رائٹس سیکرٹری موسیٰ بلوچ، بسمل بلوچ،ٹکری نور احمد قمبرانی، میر غلام فاروق نے ضلع بولان کے علاقہ کرتہ اور ڈھاڈر میں مینگل کوٹ ، جتوئی کوٹ میں پارٹی کی یونٹ سازی مہم کے سلسلے میں مختلف عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی رہنما?ں کا کہنا تھا کہ ڈھاڈر اور بولان کے لوگ کی حالت زار دہائیوں سے منتخب ہوکر ایوان تک رسائی حاصل کرنے والے عوامی نمائندوں کی نااہلی کی عکاسی کرتی ہے۔ضلع کے لوگ صحت ،،تعلیم پینے کے پانی سمیت دیگر بنیادی سہولیت سے محروم ہیں۔رہنما?ں کا کہنا تھا کہ ہر دور میں منظم سازش کے تحت بلوچستان کے حقیقی نمائندوں کا راستہ روک کر جعلی حکمرانوں کوبلوچستان کے عوام پر مسلط کیا گیا اور انہی حکمرانوں کے اتحادیوں نے بلوچستان میں تاریخی کرپشن کی بلوچستان کا معاشی استحصال اور عوام کو پسماندگی کی جانب دھکیلا ہے۔

مقررین کا کہنا تھا کہ صوبے میں حقیقی ترقی و خوشحالی بلوچ ننگ وناموس کے دفاع سائل وساحل کے تحفظ کی جدوجہد کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کیلئے صوبے کی لوگ آئندہ انتخابات میں مفادت پرست لوگوں کو مسترد کرتے ہوئے صوبے کی حقیقی قیادت کا انتخاب کریں۔ تاکہ حقیقی لوگ ایوان میں جاکر صوبے کے حق کیلئے آواز بلند کرسکیں۔